ترکیہ میں لفٹ دینے کا’خوفناک‘ انجام، مسافر نے ٹیکسی ڈرائیور قتل کرڈالا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ترکیہ میں ایک ٹیکسی ڈرائیور کے بہیمانہ قتل کے لرزہ خیز واقعے نےملک بھر میں شدید غم وغصے کی لہر دوڑا دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق سردی کے موسم میں ایک ٹیکسی ڈرائیور نے سڑک کےکنارے کھڑے شخص کے ساتھ نیکی کا مظاہرہ کرتے ہوئے اسے اپنی گاڑی میں بٹھایا مگر اس احسان فراموش نے ڈرائیور کو گولیاں مار کر قتل کردیا۔

یہ لرزہ خیز واقعہ ترکیہ کے شہر ازمیرمیں پیش آیا جہاں 44 سالہ ڈرائیور اوگز ایرگ کو 19 سالہ دلیل ایسال نے پستول سے تین گولیاں مار کر شدید زخمی کردیا۔

زخمی ڈرائیورکو اس کے دوسرے ٹیکسی ڈرائیور ساتھیوں نے ابتدائی طبی امداد کے لیے گازیمیر کے سرکاری ہسپتال منتقل کیا جہاں سے اسے اتاترک ٹریننگ اینڈ ریسرچ ہسپتال منتقل کیا گیا۔ وہاں ڈاکٹروں نے اس کی سرجری کی اور اس کے جسم میں پیوست تین گولیاں نکالیں تاہم وہ جاں بر نہ ہوسکا اور دم توڑ گیا۔

مقتول ڈرائیور کی لاش اس کے ساتھی ڈرائیوروں نے 250 ٹیکسی کاروں کے قافلے میں ازمیر میں انسٹی ٹیوٹ آف فرانزک میڈیسن کے مردہ خانے تک پہنچائی۔

ٹیکسی میں نصب نگرانی کے کیمرے نے جرم کی واردات کو ریکارڈ کرلیا۔ اس کے ساتھ ساتھ جائے وقوعہ کے ارد گرد لگے خفیہ کیمروں میں قاتل کی نشاندہی ہوگئی جس کےبعد پولیس نے اسے گرفتار کرلیا ہے۔

تین گولیاں

پولیس کو معلوم ہوا کہ نوجوان نے کچھ دیر تک ٹیکسی ڈرائیور کو مختلف پتوں پر گھومایا۔ ایک جگہ اس نے اترنے کے لیے گاڑی روکی اوراپنی جیب سے پیسے نکالنے کے بہانے پستول نکال کر ڈرائیور کو تین گولیاں ماریں۔

گولیاں مارنے کے بعد اس نے مزید تسلی کے لیے ڈرائیور کےمنہ پرزور دار تھپڑ بھی مارے۔ جب اسے اندازہ ہوا کہ ڈرائیور بے ہوش ہوگیا ہے تو اس نے گاڑی کی تلاشی لی۔ اس نے ڈرائیور کا ہیڈ فون اور موبائل فون چھین اٹھا لیا اور خالی کارتوس لے کر فرار ہو گیا۔

سی سی ٹی فوٹیجز سے پتا چلتا ہے کہ قاتل کچھ دیر گاڑی کے باہر سڑک کے کنارے کھڑا رہا۔ اس کے بعد وہاں سے ایک اور گاڑی پر بیٹھ کر نامعلوم سمت روانہ ہوگیا۔

پولیس نے اس جگہ پر تقریباً 70 سرویلنس کیمروں کے لینزسے 110 گھنٹے کی فوٹیج دیکھ کر مشتبہ شخص کی شناخت کی جس کے بعد اسے گرفتار کرکےآلہ قتل برآمد کرلیا

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں