عالمی فٹ بال مقابلوں میں شامل سعودی ریفری ھبہ شائقین کی توجہ کا مرکز

گذشتہ روز انٹرمیامی اور النصر کلب کے مقابلے میں ھبہ نے ریفری کی ذمہ داری کو نبھایا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی خاتون ریفر ھبہ العویضی سعودی النصر کلب اور امریکن کلب انٹر میامی کے درمیان کل کے میچ میں شرکت کے دوران شائقین کی توجہ کا مرکز بن گئیں۔ ھبہ نے ایک ایسے وقت میں ریفری کی ذمہ داری نبھائی جب میچ چھ پوائنٹ کے ڈرا میں انٹر میامی کے لیے بھاری نقصان کے ساتھ ختم ہوا۔

صحافی وائل الحکمی نے میچ میں چوتھے ریفری کے طور پر العویضی کی دو تصاویر شائع کیں۔ جو میچ کے دوران پورے انہماک کے ساتھ کھڑے میچ کو دیکھ رہی ہیں۔

ھبہ کی کسی میچ میں ریفری کا یہ پہلا موقع نہیں۔ اس سے قبل وہ ریاض سیزن میں خواتین ریفری کے طور پر اپنا لوہامنوا چکی ہیں۔ سعودی عرب میں خدمات کے بعد ھبہ نے بین الاقوامی مقابلوں میں بھی قدم رکھ دیا ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ سعودی خاتون ریفری نے انٹرنیشنل فٹ بال فیڈریشن (فیفا) کی بین الاقوامی فہرست میں اپنی بین الاقوامی منظوری کے بعد پہلی بار "ریاض سیزن کپ" ٹورنامنٹ کے پہلے مقابلے میں چوتھے ریفری کے طور پر انہوں نے شرکت کی۔

ہبہ 22 ریفریوں میں سے فیفا کی طرف سے تسلیم شدہ سعودی ریفریوں کی فہرست میں شامل ہوگئی ہیں۔ اس کا اعلان سعودی فیڈریشن نے گذشتہ دسمبر میں کیا تھا۔ ان میں محمد الھویش، فیصل البلوی، سامی الجریس، ماجد الشمرانی، خالد الطرہس، عبداللہ الشہری اور شکری الحنفوش شامل ہیں۔

انہوں نے خالد الاحمری کے ساتھ ایشین فٹ بال کنفیڈریشن 2022 کے زیر اہتمام "ریفریز اکیڈمی کورس" کے چوتھے ایڈیشن میں سعودی فیلڈ ریفری کے طور پر بھی حصہ لیا۔ البتہ انہوں نے پہلی بار 2017ء میں الہلال الیمامہ کلبوں کے مقابلوں میں ریفری کے طور پر کام کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں