ترکیہ مصر کو ڈرون فراہم کرنے پر رضامند

ترکیہ کے صدر طیب ایردوان کی 14 فروری کو مصری ہم منصب عبدالفتاح السیسی سے ملاقات طے شدہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ترک وزیرِ خارجہ ہاکان فیدان نے اتوار کے روز کہا کہ ایک عشرے کے انقطاع کے بعد دونوں ممالک کے تعلقات معمول پر آ گئے ہیں جس کے بعد ترکیہ نے مصر کو اپنے مقبول ہوتے ہوئے ڈرون فراہم کرنے پر اتفاق کیا۔

انقرہ اور قاہرہ نے گذشتہ سال سفراء کی تقرری کر کے سفارتی تعلقات کو بہتر بنایا جس کے بعد پہلی مرتبہ ترکیہ کے صدر طیب ایردوان 14 فروری کو اپنے ہم منصب عبدالفتاح السیسی سے ملاقات کے لیے مصر کا دورہ کرنے والے ہیں۔

فیدان نے نجی اے ہیبر ٹیلی ویژن کو بتایا کہ ترکی کے رہنما السیسی کے ساتھ ملاقات میں تجارت، توانائی اور سلامتی سمیت دو طرفہ اور علاقائی مسائل پر بات کریں گے۔

فیدان نے مزید وضاحت کیے بغیر کہا، "ہمارے تعلقات کو معمول پر لانے کے لیے مصر کے پاس کچھ ٹیکنالوجیز کا ہونا ضروری ہے۔ ہمارے پاس (مصر) کو بغیر پائلٹ کے ہوائی گاڑیاں اور دیگر ٹیکنالوجی فراہم کرنے کا معاہدہ ہے۔"

شام، لیبیا، آذربائیجان اور یوکرین کے تنازعات پر ترک ڈرونز کے اثرات کے بعد ان کی بین الاقوامی طلب میں اضافہ ہوا ہے۔ ایتھوپیا بھی ترک ڈرون کے خریداروں میں شامل ہے جس کے نیلے نیل پر ہائیڈرو پاور ڈیم پر مصر کے ساتھ کشیدہ تعلقات ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں