وائٹ ہاؤس کی ترجمان نے صدر بائیڈن کی صحت کے بارے سوال نظر انداز کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی صدرجو بائیڈن کی جانب سے کی جانے والی حالیہ ایام میں فرانسیسی صدور کے نام گڈ مڈ کرنے کے بعد سوشل میڈیا پر اس حوالے سے بحث کے باوجود وائٹ ہاؤس خاموش ہے۔

وائٹ ہاؤس کی ترجمان کرائن جین پیئر معمول کے مطابق پریس کانفرنس کی مگر انہوں نے صدربائیڈن کی صحت کے حوالے سے سوال کو گول مول کردیا۔

ایسا لگتا تھا کہ نوجوان خاتون ترجمان برونیٹ نے کچھ سوالات کو نظر انداز کیا۔

جب ایک صحافی نے ان سے پوچھا کہ "ڈیموکریٹک صدر ووٹروں کو کیسے قائل کرنے میں کامیاب رہیں گی جب کہ ان کی نفسیاتی، ذہنی اور جسمانی صحت ٹھیک نہیں ہے۔ صحافی نے صدر بائیڈن کی اس بات کا حوالہ دیا جس میں انہوں نے1996ء میں فوت ہونے والے ایک فرانسیسی صدر سے 2021ء میں ملاقات کی بات کی تھی۔

اس سوال کے جواب میں ترجمان نےکوئی جواب نہیں دیا بلکہ اس نے سوال کو نظر انداز کرتے ہوئے اپنا سر موڑ لیا اور صرف اتنا کہا کہ میں اس عجیب و غریب گفتگو میں شامل نہیں ہوں گی۔

خیال رہے کہ صدر بائیڈن نے ایک درفنتی چھوڑی جو سوشل میڈیا پر جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی۔ بائیڈن نے 2021ء میں گروپ آف سیون کی سرگرمیوں کے دوران فرانسیسی صدر فرانسوا مِٹرینڈ کے ساتھ ہونے والی حالیہ ملاقات کے بارے میں بات کی لیکن مذکورہ صدر 30 سال پہلے 1996ء انتقال کرگئے تھے۔

لاس ویگاس میں اپنے حامیوں کے ایک ہجوم سے خطاب میں بائیڈن نے اپنے پیشرو ڈونلڈ ٹرمپ کی ممکنہ دوسری صدارت کے خطرات سے خبردار کیا۔ ان کا مقصد نیواڈا میں منگل کو ہونے والے ڈیموکریٹک پارٹی کے پرائمری انتخابات سے قبل جوش و خروش کو بڑھانا تھا۔ انہوں نے ایک کہانی کو یاد کی، انہوں نے انگلینڈ میں جی 7 اجلاس کے دوران فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون کے ساتھ ہونے والی ملاقات کے بارے میں انہوں نے اپنی صدارت کے دوران کئی بار بتایا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں