برطانیہ: شاہ چارلس کا کینسر کی تشخیص کے بعد پہلی بار گھر سے نکلنے پر چرچ کا دورہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

برطانیہ کے بادشاہ چارلس نے اپنے پہلے عوامی دورے میں اتوار کو چرچ میں شرکت کی جو گذشتہ ہفتے ان میں کینسر کی تشخیص کا اعلان کرنے کے بعد پہلی بار تھی جس کے علاج کے لیے وہ کچھ مصروفیات ملتوی کر دیں گے۔

بھورے رنگ کے اوور کوٹ اور چھتری کے ساتھ بادشاہ جب مشرقی انگلینڈ میں سینڈرنگھم کے سینٹ میری میگڈلین چرچ میں اپنی اہلیہ کمیلا کے ساتھ پہنچتے تو انہوں نے ہاتھ ہلایا۔

بکنگھم پیلس نے پیر کو اعلان کیا کہ 75 سالہ چارلس کو کینسر کی ایک غیر متعینہ شکل کی تشخیص ہوئی ہے۔ والدہ ملکہ الزبتھ کی موت کے بعد بادشاہ کی تخت نشینی کو 18 ماہ سے بھی کم عرصہ ہوا ہے۔

چارلس جو اپنی دیہی سینڈرنگھم اسٹیٹ میں وقت گزار رہے ہیں، نے ہفتے کے روز ایک پیغام جاری کیا جس میں انہوں نے کینسر کی تشخیص کے بعد خیر خواہوں کا شکریہ ادا کیا۔

علاج کے دوران چارلس نے عوامی مصروفیات ملتوی کر دی ہیں لیکن بادشاہ کے طور پر اپنے زیادہ تر نجی کاموں کو جاری رکھنے کا منصوبہ بنا رہے ہیں جس میں وزیرِ اعظم کے ساتھ ہفتہ وار گفت و شنید اور ریاستی کاغذات سے نمٹنا شامل ہے۔

کینسر کا پتہ اس وقت چلا جب چارلس گذشتہ مہینے ہسپتال میں تین راتوں تک رہے۔ انہیں ایک بے ضرر بڑھے ہوئے پروسٹیٹ کے لیے اصلاحی طریقہ کار سے گذرنا تھا۔ یہ پروسٹیٹ کینسر نہیں تھا، اس بات کی تصدیق کے علاوہ شاہی محل نے مزید تفصیلات نہیں بتائیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں