ریاض میراتھن کا دو روزہ میگا ایونٹ ختم، دُنیا بھر کے 20 ہزار مرد و خواتین کی شرکت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

کل 10 فروری ہفتے کے روزسعودی اسپورٹس فار آل فیڈریشن نے ریاض میراتھن کے تیسرے ایڈیشن کے دوسرے دن کے مقابلے انعقاد کیا۔ یہ میرا تھن ریاض کے کنگڈم ایرینا میں منعقد ہوئی، جس میں دنیا بھرکے 125 ممالک کے 20,000 سے زائد مرد و خواتین نے شرکت کی۔

ریس کے اس ایڈیشن میں اپنی چار کیٹیگریز میں مملکت اور دنیا بھر سے ہزاروں کھیلوں کے شائقین اور دوڑ کے شوقین افراد کی شرکت کا مشاہدہ کیا گیا۔ اس کے علاوہ ابڑی تعداد نے تاریخی ایونٹ کو دیکھنے اور اس سے لطف اندوز ہونے کے لیے اس میں شرکت کی۔ میراتھن میں مختلف زمروں میں 7,200 خواتین نے شرکت کی۔

میراتھن کا انعقاد " کھیل سب کے لیے" فیڈریشن کی طرف سے کیا گیا جسے سعودی عرب کی وزارت کھیل کا براہ راست تعاون حاصل رہا۔ اس صحت مند ایونٹ کے انعقاد کا مقصد مملکت کے وژن 2030 پروگراموں کو آگے بڑھانا اور معیار زندگی کے پروگرام کے مقاصد کے حصول کے لیے اولمپک اور پیرا اولمپک کمیٹی اور سعودی ایتھلیٹکس فیڈریشن کی کارکردگی کو بہتر کرنا ہے۔

دیگر شرکاء اور شائقین کی پرجوش تالیوں کے درمیان مقابلہ کرنے والوں نے فنش لائن کو عبور کیال اس دوران مختلف ریسوں کے جیتنے والوں کو سات لاکھ سعودی ریال سے زیادہ مالیت کے انعامات کے علاوہ تمغوں سے نوازا گیا۔

اس ریس میں حصہ لینے والے سعودیوں کا تناسب 60 فیصد تک پہنچ گیا اور بقیہ شرکاء دوسرے ممالک سے آئے تھے۔ ان میں 95 فیصد دنیا بھر سے مملکت میں مقیم تھے۔ میراتھن میں حصہ لینے والوں کی کل تعداد 20 ہزار سے زائد ہو گئی۔

شرکاء کا فیصد 64 فی صد مردوں اور 36 فی صد خواتین پر مشتمل تھا۔ مکمل میراتھن میں 600 سے زائد حریفوں، ہاف میراتھن میں 3000 سے زیادہ حریف 10 کلومیٹر کی دوڑ میں تقریباً 8000 حریف اور 4 کلومیٹر کی دوڑ میں حصہ لینے والوں کی تعداد 8400 تک تھی۔ میرا تھن میں گذشتہ سال کے مقابلے میں حصہ لینے والوں کی تعداد میں 33 فیصد سے زیادہ اضافہ دیکھا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں