متحدہ عرب امارات صومالیہ سے 3 فوجیوں کی لاشیں آنے پر سوگ میں ڈوب گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات کی مسلح افواج کے ارکان ان دنوں صومالیہ میں اقوام متحدہ کے امن مشن کے تحت موجود ہیں۔ ان پر پچھلے دنوں ایک جگہ صومالیہ میں حملہ کر دیا گیا جس کے نتیجے میں 3 اماراتی فوجی ہلاک ہوگئے۔

امارات کے وزارت دفاع نے 3 فوجیوں کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا 'کل 4 لوگ زخمی ہوئے تھے۔ جن میں سے 2 بعدازاں زخموں کی تاب نہ لاکر ہلاک ہوگئے۔ جبکہ ایک موقع پر ہی ہلاک ہوگیا تھا۔'

اس سے پہلے متحدہ عرب امارات کی وزارت دفاع کے بیان میں بتایا گیا تھا کہ 3 اماراتی فوجی اور ایک بحرینی فوجی صومالیہ میں ہلاک ہوگئے تھے۔

اتوار کے روز الباتین ایئرپورٹ پر صومالیہ میں ہلاک ہونے والے فوجیوں کی لاشیں لائی گئیں۔ ان کے تابوتوں کو قومی پرچموں میں لپیٹا گیا تھا۔ لاشوں کی آمد کے موقع پر امارات کے اعلیٰ حکام اور عمائدین ایئرپورٹ پر موجد تھے۔ تاکہ اپنے سپوتوں کا عزت و احترام کے ساتھ استقبال کرسکیں۔

تین ہلاک ہونے والے فوجیوں میں وزارت دفاع کے اعلان کے مطابق کرنل محمد المنصوری، وارنٹ آفیسر محمد بلشمسی اور خلیفہ البلوشی شامل ہیں۔ اس دوران بحرین نے اپنی فوج کے میجرعبداللہ رشید کی لاش واپس آنے کی اطلاع دی ہے۔

متحدہ عرب امارات کی وزارت دفاع نے لاشوں کے وطن واپس آنے سے پہلے ایک بیان میں بتایا تھا کہ انہیں فرائض کی ادائیگی کے دوران دہشت گردانہ کارروائی میں نشانہ بنایا گیا۔

دہشت گردانہ کارروائی القاعدہ سے منسلک گروپ الشباب کی طرف سے کی گئی تھی۔ الشباب نے اس واقعے کی ذمہ داری بھی قبول کر لی ہے۔ یہ گروپ صومالیہ میں پچھلے 15 سال سے دہشت گردانہ کارروائیوں میں ملوث ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں