غزہ میں نیتن یاہو کے منصوبوں سے مایوس ہیں: بائیڈن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

غزہ کی پٹی میں جنگ پر امریکی انتظامیہ اور اسرائیل کے درمیان خلیج اور اختلافات گہرے ہوتے جا رہے ہیں۔ امریکی صدر بائیڈن کی مایوسی بھی بڑھتی دکھائی دے رہی ہے۔

باخبر ذرائع نے بتایا ہے کہ بائیڈن نے حالیہ نجی گفتگو کے دوران اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو کو غزہ میں اپنی فوجی حکمت عملی تبدیل کرنے پر قائل نہ کرسکنے پر مایوسی کا اظہار کیا۔

ذرائع کے مطابق بائیڈن نے تصدیق کی کہ وہ اسرائیل کو جنگ بندی پر راضی کرنے کی کوشش کر رہے ہیں لیکن نیتن یاہو اپنا غصہ ان پر نکال رہے ہیں اور ان سے نمٹنا ناممکن ہو گیا ہے۔

انہی ذرائع نے بتایا کہ بائیڈن نے اپنی نجی گفتگو میں یہ بھی کہا کہ نیتن یاہو جنگ جاری رکھنا چاہتا ہے تاکہ وہ اقتدار میں رہ سکے۔

امریکی صدر اب اسرائیلی وزیر اعظم کو تل ابیب کو غزہ کی پٹی میں فوجی حکمت عملی تبدیل کرنے پر راضی کرنے میں "بنیادی رکاوٹ" سمجھتے ہیں۔

یہ لیکس وائٹ ہاؤس کی جانب سے اتوار کے روز اس اعلان کے بعد سامنے آئیں کہ بائیڈن نے نیتن یاہو کو کسی بھی فوجی کارروائی سے پہلے رفح میں بے گھر ہونے والوں کی حفاظت کو یقینی بنانے کے پلان کو یقینی بنانے کا کہا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں