ہم نے امداد کی بین الاقوامی نگرانی کی تجویز پیش کی ہے: انروا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطینی پناہ گزینوں کے لیے اقوام متحدہ کی ریلیف اینڈ ورکس ایجنسی (انروا) کے سربراہ نے اس ضرورت پر زور دیا ہے کہ اس تنظیم کو ہفتوں کے اندر یورپی یونین سے نئی فنڈنگ دی جائے کیونکہ اسرائیل کی جانب سے رفح پر زمینی حملہ کرنے کی تیاریوں کے پیش نظر بڑی تعداد میں عام شہریوں نے ایجنسی کے پاس پناہ لی ہے۔

انروا کے کمشنر جنرل فلپ لازارینی نے کہا ایجنسی نے فراہم کی جانے والی امداد کی بین الاقوامی نگرانی کی تجویز بھی دی ہے۔ خیال رہے انروا کے 13000ملازمین میں سے 12 پر الزام عائد کیا گیا ہے کہ یہ سات اکتوبر کو حماس کے اسرائیل پر حملے میں ملوث تھے۔

انروا نے الزام کی زد میں آنے والے 12ملازمین کو نکال دیا ہے تاہم اس کے باوجود 12 سے زیادہ ملکوں نے انروا کو لگ بھگ 440 ملین ڈالر کی فنڈنگ روک دی ہے۔ یہ رقم انروا کے 2024 کے بجٹ کا تقریبا نصف بنتی ہے۔

یہ پوچھے جانے پر کہ یو این آر ڈبلیو اے کے لیے مہینے کے آخر تک یورپی یونین سے 82 ملین یورو کی وصولی کس قدر ضروری ہے؛ لازارینی نے کہا یہ انتہائی اہم ہے۔

یورپی یونین کے کرائسز منیجمنٹ کمشنر جینز لینارکیچ نے پیر کے روز تسلیم کیا کہ انروا کا ایک جائزہ حال ہی میں مکمل کیا گیا ہے۔

ایجنسی کو اکتوبر میں کمیٹی کی طرف سے شروع کیے گئے ایک جائزے میں بھی شامل کیا گیا تھا جس میں یہ نتیجہ اخذ کیا گیا تھا کہ حماس کو کوئی بھی فنڈ نہیں پہنچایا گیا۔

لازارینی نے پیر کو برسلز کا سفر کیا تاکہ ایجنسی کی ضروریات اور اس کے خلاف الزامات کے بارے میں ترقیاتی پالیسی کے ذمہ دار یورپی یونین کے وزراء کو آگاہ کیا جا سکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں