ترکیہ سیاحت، تعمیرات اور دفاع میں سعودی عرب کے ساتھ تعاون پر تیار ہے: وزیر خزانہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ترک وزیر خزانہ محمد شیمشک نے کہا ہے کہ پچھلے سال کی دوسری ششماہی میں ترکیہ کو خالص سرمایہ کاری کی روانی میں اضافہ ہوا ہے۔ ان کا خیال ہے کہ مارچ کے آخر میں مقامی انتخابات کے بعد یہ بہاؤ تیز ہوجائے گا۔

استنبول میں سعودی سعودی انویسٹمنٹ اینڈ بزنس فورم کے دوران گفتگو کرتے ہوئے شیمشک نے کہا کہ ترکیہ سیاحت، تعمیرات اور دفاع کے شعبوں میں سعودی عرب کے ساتھ کام کرنے کے لیے تیار ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ وہ افریقہ میں مختلف منصوبوں میں تعاون کرسکتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ترک افراط زر کی مارکیٹ کی توقعات حکومت کی توقعات کے قریب ہیں۔

مشترکہ معاشی نقل و حرکت

یہ بات قابل غور ہے کہ سعودی عرب اور ترکیہ نے باہمی سرمایہ کاری اور دیگر اقدامات کے ذریعہ دونوں ممالک کے مابین دوطرفہ معیشت کی حمایت کے لیے بنیادی اقدامات اٹھائے ہیں۔

دونوں ممالک کے بنیادی اقدامات کے ذریعے سعودی ترکیہ کے تعلقات معاشی تحریک کا مشاہدہ کر رہے ہیں۔ ریاض کی طرف سے ترکیہ کے مرکزی بینک میں 5 ارب ڈالر جمع کرنے کے فیصلے کے بعد دونوں ممالک کےدرمیان اقتصادی تعلقات میں بہتری آئی ہے۔

ترکیہ میں 1140 سعودی کمپنیوں کی سرمایہ کاری ہو رہی ہےجب کہ سعودی عرب میں 390 ترک کمپنیاں کام کررہیں ہیں۔

سعودی آرمکو ترکیہ کے ساتھ معاشی تحریک کی بھی رہ نمائی کر رہا ہے کیونکہ اس نے 80 ترک تعمیراتی کمپنیوں کےساتھ سعودی عرب میں 50 ارب ڈالر کے معاہدے کیے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں