امریکی صدارت کے آزاد امیدوار رابرٹ کینیڈی کا 'العربیہ' کے رض خان کے ساتھ انٹرویو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

رابرٹ ایف کینیڈی جونئیر نے امرہیکہ میں دو جماعتی نظام کو توڑنے کے لیے 2024 کے صدارتی انتخاب میں بطور آزاد صدارتی امیدوار سامنے آنے کا جواز بیان کرتے ہوئے کہا ' اس وقت امریکہ اور پوری دنیا مختلف بحرانی حالات سے دو چار ہے، اس لیے میں نے منفرد سیاسی موقف کے ساتھ اور مختلف اپروچ کے ساتھ انتخابی میدان میں اترنے کا فیہصلہ کیا ہے۔ '

ضرورت ہے کہ روایتی دو جماعتی نظام کو بدلا جائے جس کے امریکی تاریخ کے دو انتہائی غیر مقبول امیدورا جوبائیڈن اور ٹرمپ کی صورت میدان میں آمنے سامنے آرہے ہیں۔

کینیڈی جونئیر نے ' العربیہ' سے کہا ' اس وقت ساٹھ سے اکسٹھ فیصد امریکی عوام حالیہ جائزوں میں عوام انتخابی جائزوں میں کہہ چکے ہیں کہ وہ ان دونوں امیدواروں کو نہیں چاہتے ہیں۔

رابرٹ ایف کینیڈی کی انتخابی مہم

کینیڈی جونئیر نے اپنی مہم کے دوران بطور خاص 45 سال تک کےووٹروں کو اپنی طرف مائل کرنے کی کوشش کی ہے۔ ان کا فوکس مثبت پولنگ نمبرز پر اور مضبوط پسندیدگی کے حوالے سے ہے ۔ وہ کوشش کر رہے ہیں کہ وہ 45 سال سے کم عمر کے اور نسبتًا آزاد سوچ اور ذہن رکھنے والے امریکیوں پر انحسار کر رہے ہیں۔

انہوں نے بتایا ان کی کوشش پورے امریکہ سے ووٹ لینے کی کوشش ہے اورا س سے پہلے دس لاکھ افراد کے دستخط حاصل کرنا چاہتے ہیں تاکہ ووٹرز سے یہ باور کرائیں کہ وہ ان کے ساتھ ہیں۔ وہ تجربے کی کمی کی پروا نہیں کرتے بلکہ سمجھتے ہیں کہ موقف کی سچائی عوام کو متوجہ کر سکے گی۔

انٹرویو کے دوران کینیڈی جونئیر نے بعض متنازعہ موضوعات پر بھی بات کی جن میں ، امیگریشن پالیسی، خارجہ پالیسی ، اسرائیل کی غزہ میں جاری طویل جنگ پر بھی بات کی۔

خارجہ پالیسی کے بارے میں رابرٹ کینیڈی نے خارجہ پالیسی پر، کینیڈی فوجی مداخلتوں کے لیے دو طرفہ حمایت پر تنقید کی۔ عالمی تنازعات کو برقرار رکھنے میں امریکہ کے کردار کے طور پر اسے ختم کرنے کا مطالبہ کرتے ہیں۔ غزہ پر جنگ کی بات ہوئی تو کینیڈی نے اسرائیل اور حماس کے تنازع کے ارد گرد رہنے والے بیانیہ کو چیلنج کیا۔

کینیڈی کو موقف ہے کہ غزہ میں اسرائیل کے اقدامات نسل کشی پر مبنی نہیں ہیں بلکہ ایک دشمن کے خلاف اپنی خودمختاری کے دفاع کے لیے ایک جنگی کوشش ہے۔ کینیڈی اسرائیل کے سخت حامی ہیں اور کہتے ہیں کہ 'اسرائیل واحد ملک ہے جو بنباری سے پہلے علاقے کو خالی کرنے کا کہتا ہے۔ ایسا کوئی اور نہیں کہتا ،'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں