فلسطین اسرائیل تنازع

ناروے فلسطینی اتھارٹی کو اسرائیل سے محصولات کی منتقلی کرائے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اہم یورپی ملک ناروے کے وزیر اعظم نے جیسا کہ ایک روز قبل کہا تھا ہے کہ فلسطینی اتھارٹی کے لیے ٹیکسوں سے حاصل ہونے والی رقوم جنہیں اسرائیل نے اکتوبر سے ضبط کرنے کا اعلان کر رکھا ہے ، بلا تعطل فراہمی آسان بنانے کی کوشش کی جارہی ہے اور اس سلسلے میں فیصلے کے قریب ہیں۔

اب اتوار کے روز اوسلو کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ فلسطینی اتھارٹی کو بچانے کے لیے یہ محصولارت سے حاصل ہونے والی رقم پی اے کو منتقل کی جائے گی۔ اتھارٹی یہ رقم نہ صرف سکولوں اور صحت کے شعبے کے ملازمین کی تنخواہوں کے لیے ادا کر سکے گی بلکہ مالی طور پر دیوالیہ ہونے سے بھی بچ سکے گی۔

ناروے کے وزیر اعظم جوناس گاہر نے کہا ہے کہ یہ فلسطینی اتھارٹی کے جائز وجود کو برقرار رکھنے کے بھی ضروری ہے اور خطے میں استحکام کے لیے بھی اہم ہے۔

اس فیصلے کے نتیجے میں ناروے سات اکتوبر کے بعد سے اسرائیلی کی طرف سے روکی گئی رقومات اتھارٹی کو منتقل کرنے میں ثالث کے طور پر کام کرے گا۔ ناروے کے ترجمان کے مطابق بعد فلسطینی اتھارٹی دیگر فنڈز کو قبول کرنے کے لیے تیار ہے،

ناروے کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ ناروے کی آمدنی کا حصہ غزہ کے لیے اسرائیل کے تخمینہ کے برابر رکھے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں