امریکی ایئرلائن کا تل ابیب کے لیے پروازوں کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکہ نے سات اکتوبر سے غزہ میں جاری جنگ کے سبب تل ابیب کے لیے معطل کی گئی پروازوں کو از سر نو بحال کرنے کا اعلان کیا ہے۔ اس سلسلے میں امریکہ کی 'یونائیٹڈ ائیرلائینز' نے بدھ کے روز اعلان کیا ہے کہ وہ اپنی پرواز اگلے ماہ سے تل ابیب کے لیے بحال کرے گی۔

'یونائیٹڈ' نے منصوبہ بنایا ہے کہ ابتدائی طور پر یہ پروازیں نیو یارک اور نیو جرسی سے تل ابیب کے لیے 2 اور 4 مارچ کو روازنہ ہوں گی۔ اور پروازوں کی نان اسٹاپ بحالی 6 مارچ سے شروع ہوگی۔

اس سلسلے میں امریکی ائیر لائنز کی طرف سے جاری کی گئی پریس ریلیز میں بتایا گیا کہ 'یونائیٹڈ' کی تل ابیب کے لیے پروازوں کی بحالی کے سلسلے میں امریکی و اسرائیلی سیکورٹی ماہرین اور سرکاری حکام کے ساتھ حفاظتی معاملات کا مکمل اور تفصیلی جائزہ لیا گیا۔

کمپنی کا مزید کہنا تھا کہ وہ پروازوں کے شیڈول کو تل ابیب کے سیکورٹی صورت حال کے مطابق تشکیل دیں گے اور اس میں حسب ضرورت تبدیلی کرتے رہیں گے۔ نیز پروازوں کی بحالی کے لیے وہ تل ابیب کے صورت حال کی مسلسل نگرانی بھی کریں گے۔ اس کے ساتھ ساتھ اس بات کی امید ہے کہ وہ نیو یارک سے دوسروی پروازیں مئی سے قبل ممکن بناسکیں گے اور موسم خزاں کے آغاز سے قبل وہ دیگر شہروں سے پروازوں کی از سر نو بحالی کے لیے جائزہ لیں گے جن میں سان فرانسسکو، واشنگٹن اور شکاگو شامل ہیں۔

واضح رہے کہ غزہ میں سات اکتوبر سے جاری جنگ اور اسرائیلی افواج کے غزہ پر محاصرہ کے بعد سے امریکی ائیر لائنز 'یونائیٹڈ' اور اس کی حریف کمپنی 'ڈیلٹا' نے اپنی پروازیں تل ابیب کے لیے معطل کر دی تھی۔

ڈیلٹا کے ترجمان نے اس سلسلے میں 'اے ایف پی' کو 19 جنوری کو بتایا تھا کہ وہ اپنی پروازوں کو تل ابیب کے لیے 30 اپریل تک غزہ میں جاری جنگ کے سبب معطل رکھے گی۔ اور اس کے ساتھ ہی وہ پروازوں کی بحالی کے لیے خطے میں جاری سیکورٹی صورتحال کا مسلسل جائزہ لے رہے ہیں۔ دوسری کمپنیاں جنہوں نے اسرائیل کے لیے اپنی پروازوں کو از سر نو بحال کیا ہے ان میں 'برٹش ائیر لائنز'، 'لفتھانزا'، 'ائیر فرانس' اور 'ریان ائیر' شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں