واشنگٹن میں اسرائیلی سفارت خانے کے باہر خود سوزی کرنے والا شخص امریکی پائلٹ نکلا

’’خود سوزی کرنے والے شخص نے لائیو ویڈیو پیغام میں کہا کہ ’میں غزہ میں نسل کشی میں مزید حصہ نہیں لے سکتا، ساتھ ہی اس نے فلسطین زندہ باد کے نعرے لگائے‘‘

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

گذشتہ روز واشنگٹن ڈی سی میں اسرائیلی سفارت خانے کے سامنے خود کو آگ لگانے والے شخص کی نئی معلومات سامنے آئی ہیں۔ حیران کن طور پر پتا چلا ہے کہ خود سوزی کرنے والا شخص امریکی پائلٹ ہے اور اس نے فلسطینیوں کی حمایت میں اور اسرائیلی کارروائیوں کے خلاف بہ طور احتجاج خود سوزی کی ہے۔

واقعہ سے واقف شخص نے تصدیق کی خود سوزی کرنے والا شخص امریکی فضائیہ کا پائلٹ ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ اسرائیلی سفارت خانے کی طرف جانے والے شخص کی شناخت سامنے نہیں لائی گئی تاہم اس کے بارے میں حکام نے بتایا کہ مقامی وقت کے مطابق وہ شخص دوپہر ایک بجے سے پہلے سفارت خانے کے ہیڈ کوارٹر گیا۔ وہاں اس نے اپنا موبائل فون پکڑا اور ویڈیو براڈکاسٹنگ پلیٹ فارم "ٹویچ" پر براہ راست نشر کرنا شروع کر دی۔

دریں اثناء، سوشل میڈیا سائٹس بشمول ’ایکس ٹوڈے‘ پر گردش کرنے والی ویڈیوز میں دکھایا گیا ہے کہ فوجی نے براہ راست نشریات شروع کیں اور بولنا شروع کر دیا۔اس نے کہا کہ ’وہ غزہ میں نسل کشی میں مزید حصہ نہیں لے گا‘۔

پھراس نے اپنا فون زمین پر رکھا۔ اپنے اوپر کوئی مادہ انڈیل کر آگ لگا دی۔ وہ چیختے ہوئے "فلسطین زندہ باد اور آزاد فلسطین " کےنعرے لگا رہا تھا۔

لائیو ویڈیو براڈکاسٹ

جبکہ العربیہ ڈاٹ نیٹ نے اس ویڈیو کو شائع کرنے سے گریز کیا۔ بعد ازاں ٹوئیچ پلیٹ فارم نے بھی اس ویڈیو کو حذف کردیا۔

لیکن امریکی قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں نے ایک کاپی حاصل کی اور اس کا جائزہ لیا۔

جب کہ واشنگٹن ڈی سی پولیس نے وضاحت کی کہ سکیورٹی اہلکار اسرائیلی سفارت خانے کے باہر جائے حادثہ پر سیکرٹ سروس کے افسران کی مدد کے لیے گئے اور انہوں نے ایک مشکوک کار کی جانچ کے لیے بم کے ماہرین کو بھی بلایا۔

واشنگٹن میں اسرائیلی سفارت خانے کے سامنے
واشنگٹن میں اسرائیلی سفارت خانے کے سامنے

قابل ذکر ہے کہ یہ واقعہ ایک ایسے وقت میں پیش آیا جب اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو جنوبی غزہ کی پٹی کے شہر رفح میں حماس کے خلاف زمینی فوجی آپریشن کی تیاری کررہے ہیں۔

ماہرین کا خیال ہے کہ امریکا میں کسی پائلٹ کا فلسطینیوں کی حمایت میں انتہائی اقدام اٹھانا امریکی عوامی حلقوں میں فلسطینیوں کے حوالے سے جذبات کی عکاسی کرتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں