اسرائیل نے غزہ میں 25000 سے زیادہ خواتین اور بچوں کو قتل کیا: امریکی وزیر دفاع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

واشنگٹن نے پہلی بار غزہ پر اسرائیلی جنگ سے ہونے والی ہلاکتوں کو تسلیم کیا ہے۔ امریکی وزیر دفاع لائیڈ آسٹن نے کہا کہ اسرائیل نے 7 اکتوبر سے اب تک غزہ میں 25000 سے زیادہ خواتین اور بچوں کوقتل کردیا ہے۔ اسرائیل کو شہریوں کو تحفظ فراہم کرنے کے لیے بہت کچھ کرنا ہوگا۔

کانگریس کی سماعت کے دوران لائیڈ آسٹن سے اسرائیل کے ہاتھوں قتل ہونے والی فلسطینی خواتین اور بچوں کی تعداد کے بارے میں پوچھا گیا تو انہوں نے جواب دیا 25000 سےزیادہ۔ آسٹن نے مزید کہا کہ اسرائیل کی غزہ پر جنگ کے آغاز سے لے کر اب تک تقریباً 21000 انتہائی درست گائیڈ کیے جانے والے گولے اسرائیل کو بھیجے جا چکے ہیں۔

بائیڈن نے پیر کو جنگ بندی کو مسترد کردیا۔ امریکی صدر جو بائیڈن نے پیر تک اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ بندی کو مسترد کر دیا ہے۔ اس ہفتے کے شروع میں وہ توقع کر رہے تھے کہ پیر تک جنگ بندی معاہدہ ہو جائے گا۔ جمعرات کو صحافیوں کے سوالوں کے جواب میں بائیڈن نے کہا امید لامتناہی ہوتی ہے۔ لیکن لیکن زیادہ تر امکان یہ ہے کہ پیر تک ایسا نہیں ہوگا۔

بائیڈن نے جمعرات کو اس بات کی تصدیق کی کہ امریکہ غزہ میں امداد کی تقسیم کے مقام پر ہونے والی فائرنگ کے بارے میں دو متضاد کہانیوں کی تصدیق کر رہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جو کچھ ہوا وہ جنگ بندی کے مذاکرات کو پیچیدہ بنا دے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں