اہرام مصر کے ہم شکل ستارہ نما ٹیلوں کی دریافت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اہرام مصر کی شکل کے دکھنے والے ستارے کے ٹیلے کی ریافت ہوئی ہے۔ یہ ٹیلے صحراء کے عجائبات میں سے ہے۔ بتایا گیا ہے کہ مرکزی چوٹی کو اوپر سے دیکھے جانے پر یہ ستارے کی طرح دکھائی دیتا ہے۔ ریت کا یہ ٹیلہ 1000 فٹ کے برابر ہے۔

پیر کے روز سائنسدانوں نے ستارے کے ٹیلے کے مطالعہ کی نقاب کشائی کی ہے۔ اس تحقیقاتی مطالعہ میں زمینی خصوصیات کی اندرونی ساخت کا انکشاف کیا گیا ہے۔ نیز یہ بھی دکھایا گیا ہے کہ ریت کے ایک ٹیلے کو بننے میں کتنا وقت لگتا ہے۔ خیال رہے کہ ایک ٹیلے کے بننے کا عمل کئی سدیوں پر محیط ہوتا ہے۔

الجزائر کی سرحد کے قریب لالہ لالیا نامی ستارے کے ٹیلے پر توجہ مرکوز کی گئی ہے۔ یہ صحرائے صحارا کے اندر مرزوگا شہر سے تقریباً 3 میل کے فاصلے پر واقع ہے۔ بتایا گیا ہے کہ لالہ لالیا تقریباً 2300 فٹ چوڑا ہے اور یہ اردگرد کے ٹیلوں سے 330 فٹ اونچا ہے۔

ستارے کے ٹیلے زمینی صحراؤں کے ٹیلوں کے 10 فیصد سے بھی کم ہیں۔ یہ ٹیلے بارچن ٹیلوں ، سیدھے اور لمبی لکیروں والے ٹیلوں سے زیادہ اونچے ٹیلے ہیں۔ ان ٹیلوں کو مریخ اور زحل کے بڑے چاند پر بھی دیکھا گیا ہے۔

ایبرسٹ وتھ یونویرسٹی میں جغرافیہ کے ماہر دان جیوف ڈلر نے کہا 'میں نے 20 سال پہلے نیمبیا میں ستاروں کے ٹیلوں کو دیکھا تھا۔ ان کے حجم کو دیکھ میں بہت حیران ہوا تھا۔' جیوف ڈلر نے مزید کہا 'مجھے صحرائی ٹیلے بہت اچھے لگتے ہیں۔ دنیا کے مختلف صحراؤں میں پیلے، سفید، سرخ ، کالے ٹیلے اور ریت کے مختلف رنگ بہت حیران کن چیز ہے۔'

تحقیقاتی مطالعہ میں بتایا گیا ہے کہ لالہ لالیا 1 اعشاریہ 6 فٹ سالانہ کی رفتار سے مغرب کی طرف بڑھ رہا ہے۔ ستارے کے بڑے ٹیلے مغربی چین کے صحرائے بدین جاران میں پائے جاتے ہیں۔ الجزائر میں ریت کے برے سمندروں گرینڈ ایرگ اوکسیڈنٹل اور سعودی عرب میں رب الخالی میں بھی ستارے کے ٹیلے موجود ہیں۔ علاوہ ازیں شمالی امریکہ میں کولوراڈو میں سینڈ ڈینس نیشنل پارک کی سیریز بھی شامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں