حوثیوں کے میزائل حملے میں بحیرہ احمر میں ایک بحری جہاز متاثر:امریکی فوج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی سینٹرل کمانڈ نے منگل کے روز اعلان کیا ہےکہ حوثیوں نے کل شام خلیج عدن کی طرف دو اینٹی شپ بیلسٹک میزائل داغے جن کے نتیجے میں لائبیریا کا جھنڈا لہرانے والے سوئس ملکیتی کنٹینر جہاز کو نشانہ بنایا گیا۔

اس نے ’ایکس پلیٹ‘ فارم پر اپنے اکاؤنٹ پر شائع ہونے والے ایک بیان میں وضاحت کی کہ ایک میزائل جہاز سے ٹکرایا اور اس سے نقصان پہنچا لیکن ابتدائی رپورٹس میں عملے کے ارکان کے زخمی ہونے کی اطلاع نہیں ملی۔

مدد نہیں مانگی

امریکی سینٹرل کمانڈ نے تصدیق کی کہ جہاز اپنی منزل کی طرف سفر جاری رکھے ہوئے ہے اور اس نے مدد کی درخواست نہیں کی۔

اس نے بتایا کہ حوثیوں نے پیر اور منگل کی درمیانی رات کے بعد ایک اینٹی شپ بیلسٹک میزائل داغا۔ انہوں نے مزید کہا کہ میزائل پانی میں گرا جس میں تجارتی بحری جہاز یا امریکی جہازوں کو کسی قسم کے نقصان نہیں پہنچا۔

بحیرہ احمر میں بحری جہاز پر حوثیوں کے گزشتہ حملے سے
بحیرہ احمر میں بحری جہاز پر حوثیوں کے گزشتہ حملے سے

انہوں نے مزید کہا کہ امریکی افواج نے صنعاء کے وقت کے مطابق کل شام ٹھیک آٹھ بجے دو حوثی اینٹی شپ کروز میزائلوں کے خلاف اپنے دفاعی حملے کیے،جو خطے میں تجارتی بحری جہازوں اور امریکی بحریہ کے جہازوں کے لیے خطرہ تھے۔

قبل ازیں حوثی گروپ نے اعلان کیا تھا کہ اس نے "بحیرہ عرب اور بحیرہ احمر میں ایک اسرائیلی جہاز اور امریکی جنگی جہازوں کو نشانہ بناتے ہوئے دو کارروائیاں کیں"۔

19 نومبر سے ایرانی حمایت یافتہ حوثی گروپ نے اس بین الاقوامی سطح پر اہم شپنگ لین میں تجارتی بحری جہازوں پر ڈرونز اور میزائلوں سے تقریباً 60 حملے کیے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں