امریکی اور برطانوی افواج کے یمن میں حوثیوں کے ٹھکانوں پر تازہ حملے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن کے ایران نواز حوثی گروپ کے میڈیا نے اطلاع دی ہے کہ امریکہ اور برطانیہ نے یمن کے شہر حدیدہ میں راس عیسیٰ کے علاقے میں حوثیوں کے کچھ ٹھکانوں پر بمباری کی ہے۔

حوثیوں سے وابستہ المسیرہ چینل نے جمعرات کو کہا کہ امریکہ اور برطانیہ نے مغربی یمن میں الحدیدہ گورنری کے الصلیف ڈاریکٹوریٹ میں راس عیسیٰ کے علاقے پر دو حملے کیے ہیں۔

چینل نے فوری طور پر کسی قسم کے جانی نقصان کی تصدیق نہیں کی۔

کل جمعرات کو امریکی سینٹرل کمانڈ نے اعلان کیا کہ اس نے یمن میں حوثیوں کے زیر کنٹرول علاقوں میں دو ڈرونز پر بمباری کی ہے اور کہا کہ ان سے خطے میں تجارتی بحری جہازوں اور امریکی بحریہ کے جہازوں کے لیے خطرہ لاحق تھا۔

امریکہ اور برطانیہ نے حوثیوں کے مراکز پر بار بار فضائی حملوں کی ہدایت کی جس کا مقصد اس گروپ کی نیوی گیشن کی آزادی کو خطرے میں ڈالنے اور عالمی تجارت کو خطرہ میں ڈالنے کی صلاحیت کو متاثر کرنا اور کمزور کرنا ہے۔

حوثیوں کا کہنا ہے کہ وہ غزہ کی پٹی کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے اسرائیلی کمپنیوں کے زیر ملکیت یا اسرائیل تک سامان لے جانے والے جہازوں کو نشانہ بنا رہے ہیں۔

یمن میں حوثی گروپ کے رہ نما عبدالملک الحوثی نے جمعرات کو کہا کہ اس گروپ نے 7 اکتوبرکوطوفان الاقصیٰ کے بعد سے فلسطینیوں کی حمایت میں 61 بحری جہازوں کو نشانہ بناتے ہوئے 96 آپریشن کیے ہیں۔

انہوں نے ایک ٹیلی ویژن تقریر میں کہا کہ ان کارروائیوں میں 403 میزائل اور ڈرون داغے گئے۔ صرف رواں ہفتے آٹھ حملے ہوئے جن میں سات جہازوں کو نشانہ بنایا گیا اور 19 میزائل اور ڈرون استعمال کیے گئے۔

امریکہ اور برطانیہ حوثیوں کے ٹھکانوں پر بار بار فضائی حملوں کی ہدایت کرتے ہیں، جس کا مقصد اس گروپ کی نیوی گیشن کی آزادی کو خطرے میں ڈالنے اور عالمی تجارت کو خطرے میں ڈالنے کی صلاحیت میں خلل ڈالنا اور کمزور کرنا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں