غزہ میں سیز فائر کے بغیر رمضان کی آمد پر ہمارے دل دکھی ہیں: شاہ سلمان

’بین الاقوامی برادری فلسطین میں ’وحشیانہ جرائم‘ کو روکنے، محفوظ انسانی اور امدادی راہداریاں کھولنےکی ذمہ داری پوری کرے‘۔

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے کہا کہ ’ہمارے لیے تکلیف کا باعث کہ رمضان المبارک ایسے وقت میں آ رہا ہے جب ہمارے فلسطینی بھائی جارحیت کا سامنا کر رہے ہیں۔‘

مملکت کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ایس پی اے کے مطابق شاہ سلمان نے ماہ مبارک کی آمد پر مملکت کے شہریوں، مقیمین اور تمام مسلمانوں کو مبارکباد دی ہے۔

رمضان المبارک کی آمد پر اپنے پیغام میں انہوں نے زور دیا کہ’بین الاقوامی برادری فلسطین میں ’وحشیانہ جرائم‘ کو روکنے، محفوظ انسانی اور امدادی راہداریاں کھولنےکی ذمہ داری پوری کرے‘۔

انہوں نے مملکت کی حدود کی حفاظت کرنے والے عسکری، سکیورٹی اداروں کے اہلکاروں اور وطن کی خدمت میں مصروف مختلف محکموں سے تعلق رکھنے والے تمام سرکاری ملازمین کو ماہ مبارک کی خصوصی مبارکباد دی۔

شاہ سلمان نے مزید کہا ’ہم اللہ کا شکر ادا کرتے ہے جس نے اس ملک کو اسلام کا سرچشمہ بنایا، جہاں سے اسلام کا پیغام پوری دنیا میں پھیلا اور ہمیں حرمین شریفین اور ان کے زائرین کی خدمت کا موقع دیا۔‘

’حرمین شریفین کی دیکھ بھال، زائرین کی خدمت، حرمین شریفین کی تعمیر وتوسیع مملکت کی قیادت اور عوام کے لیے باعث فخر واعزاز ہے۔

شاہ عبدالعزیز کے ہاتھوں مملکت کے قیام کے بعد تمام فرمانروا اسی طریقہ کار پر چلے ہیں جو کہ مملکت کے اسلام اور مسلمانوں کی خدمت میں قائدانہ کردارسے واضح ہے‘۔

خادم حرمین شریفین نے اپنے پیغام میں جو وزیر اطلاعات سلمان الدوسری نے پڑھ کر سنایا دعا کی ’یہ مبارک مہینہ عالم اسلام اور تمام دنیا کے لیے امن وسلامتی کا باعث بنے۔‘

پیغام کے آخر میں مملکت کے امن اور خوشحالی قائم رہنے اور روزہ داروں کے روزے قبول ہونے کی دعا کی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں