ایک خاندان کے 4 افراد کی کثیر منزلہ عمارت سے چھلانگ لگا کراجتماعی خود کشی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سوشل میڈیا صارفین نے انڈونیشیا میں ایک باپ، ماں اور دو بچوں پر مشتمل ایک خاندان کی اجتماعی خودکشی کی دستاویزی ویڈیو کلپ نشر کی ہے۔

خاندان کی اجتماعی خودکشی

مانیٹرنگ کیمرے میں محفوظ ہونے والے منظر میں دیکھا جا سکتا ہےکہ چار افراد پر مشتمل ایک خاندان کو 21 منزلہ عمارت کی چھت پر جاتے ہوئے دیکھا گیا۔ پھر وہ سب عمارت کے اوپر سے کود گئے۔

پولیس چیف نے کہا کہ وہ اس واقعے کی "اجتماعی خودکشی" کے طور پر تفتیش کر رہے ہیں کیونکہ جب وہ گرے تو انہیں ایک رسی ملی جس سے ان سب کے ہاتھ باندھے ہوئے تھے۔

خود کشی کرنے والے ماں باپ اور دو بچے

چاروں کی موت شمالی جکارتہ کے علاقے پینجارنگن میں 21ویں منزل سے چھلانگ لگانے کے فوراً بعد ہوئی۔

اس حادثے نے بڑے پیمانے پر ہنگامہ برپا کر دیا کیونکہ خود کشی سے مرنے والوں میں دو کم عمر بچے ہیں۔

انڈونیشی میڈیا نے مرنے والوں کی شناخت ظاہر کرتے ہوئے بتایا کہ 50 سالہ شخص، اس کی 52 سالہ بیوی، ان کی 15 سالہ بیٹی اور ان کا 13 سالہ بیٹا شامل ہیں۔

ابھی تک اس حیران کن اور خوفناک واقعے کی وجہ سامنے نہیں آئی ہے۔ البتہ پولیس اس کے مختلف پہلوؤں پر تحقیقات کررہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں