"ہم بنانا ریپبلک نہیں" نیتن یاہو نے امریکی تنقید مسترد کردی

امریکی سینیٹر چک شومر کا اسرائیلی انتخابات کے حوالے سے تبصرہ نامناسب ہے: اسرائیلی وزیر اعظم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو نے امریکی سینیٹ میں ڈیموکریٹک اکثریت کے کے اسرائیل میں نئے انتخابات کرانے کے مطالبے کی مذمت کرتے ہوئے اس معاملے کو "مکمل طور پر نامناسب" قرار دیا۔ اس تجویز پر تبصرہ کرتے ہوئے نیتن یاہو نے سی این این کو انٹرویو میں کہا "ہم بنانا ریپبلک نہیں ہیں"۔ امریکی صدر جو بائیڈن نے چک شومر کی جمعرات کی اس تقریر کی تعریف کی جس میں انھوں نے نیتن یاہو کو امن کی راہ میں رکاوٹ قرار دیا تھا ۔

چک شومر
چک شومر
Advertisement

نیتن یاہو، جن کی فوج نے 163 دنوں میں غزہ میں 31645 فلسطینیوں کو شہید کردیا ہے نے امریکہ کی بڑھتی ہوئی تنقید کی مذمت کی اور کہا کہ کوئی بھی دباؤ اسرائیل کو مکمل فتح حاصل کرنے سے نہیں روک سکے گا۔ حالیہ دنوں میں سینئر امریکی حکام نے نیتن یاہو اور ان کی حکومت سے اپنی مایوسی کا کھلے عام اظہار کیا ہے۔

امریکی صدر بائیڈن نے نیتن یاہو پر الزام لگایا ہے کہ وہ غزہ میں بڑی تعداد میں شہریوں کی ہلاکتوں کی وجہ سے اسرائیل کو فائدہ نہیں بلکہ نقصان پہنچا رہے ہیں۔ اس کے بعد اعلی امریکی عہدیدار چک شومر نے کہا تھا کہ نتین یاہو اپنا راستہ کھو چکے ہیں اور اسرائیل میں نئے انتخابات ہونے چاہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں