حوثیوں نے بحیرہ احمر میں اسرائیلی کشتی کو نشانہ بنا ڈالا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن کے حوثیوں کے ترجمان یحیٰ ساریا نے تازہ حوثی حملوں کے بارے میں بتایا ہے کہ اسرائیلی کشتی پر بحیرہ احمر میں حملہ کیا گیا ہے۔ یحیٰ ساریا نے اس بارے میں منگل کو بیان جاری کیا ہے۔

بیان کے مطابق اسرائیل مال بردار کشتی ' ماڈو' کو حوثی بحریہ نے میزائلوں کے ساتھ بحیرہ احمر میں حملے کی زد میں لیا ہے۔ جبکہ اسرائیلی علاقے ایلات میں پروں والے میزائلوں سے اہداف کو نشانہ بنایا ہے۔

واضح رہے 'ماڈو' نامی کشتی ایک ایل پی جی ٹینکر بردار کشتی ہے۔میری ٹائم شپنگ ٹریکرز کے مطابق یہ سعودی عرب سے سنگا پور جارہی تھی۔تاہم حوثیوں کا کہنا ہے کہ یہ کشتی امریکی تھی۔

ایرانی حمایت یافتہ حوثیوں کی بحیرہ احمر میں کارروائیاں کافی بڑھ گئی ہیں۔ یہ حوثی دعویٰ رکھتے ہیں کہ ان کی یہ سب سمندری کارروائیاں سات اکتوبر سے غزہ میں جاری جنگ اور اسرائیل کے خلاف رد عمل کا اظہار ہیں۔

بحیرہ احمر میں حوثیوں نے شروع میں اسرائیل اور اس کے سرپرستوں اور بڑے اتحادیوں کے جہازوں کو نشانہ بنانے کا علان کیا تھا۔ ماہ نومبر سے حوثیوں کے حملوں کا یہ سلسلہ جاری ہے۔ اب تک ان میزائل حملوں کی زد میں مختلف ملکوں کے اہداف آچکے ہیں۔

حوثیوں کے حملوں کی وجہ سے جہاز رانی کافی متاثر ہوئی ہے، جہازوں کو لمبا راستہ اختیار کرنا پڑتا ہے۔ جس سے ان کے نقل و حمل کے اخراجات میں بہت اضافہ ہو گیا۔ امریکہ نے کثیر ملکی اتحاد بنا کر ان حوثیوں کو ناکام بنانے کے لیے برطانیہ کے ساتھ مشترکہ فضائی حملے کیے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں