اسرائیلی وزیر خارجہ نے اقوام متحدہ کو ’یہود دشمن ادارہ‘ قرار دے دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسرائیل کے وزیر خارجہ کاٹز نے اس امر پر سخت غم و غصے کا اظہار کیا ہے کہ اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس نے غزہ کے ساتھ جڑی سرحد کا دورہ کیا ہے اور ایک بار پھر اپیل کی ہے کہ انسانی بنیادوں پر غزہ میں جنگ بندی کی جائے۔

سیکرٹری جنرل کا غزہ کی سرحد پر یہ دورہ غیر معمولی اہمیت کا حامل ہے۔ واضح رہے پچھلے ہفتے اقوام متحدہ کے ذیلی ادارہ 'اونروا' کے سربراہ کو اسرائیل نے غزہ میں داخل ہونے سے منع کر دیا تھا۔ اسرائیلی سفارتکار بھی پچھلے کئی ماہ سے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل سے لے کر دیگر عہدیداروں، ذیلی اداروں اور براہ راست اقوام متحدہ کو اپنے تابڑ توڑ حملوں کی زد میں رکھے ہوئے ہے۔

وزیر خارجہ کاٹز نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم 'ایکس' پر لکھا ہے کہ 'سیکرٹری جنرل کی قیادت میں اقوام متحدہ یہود دشمن اور اسرائیل دشمن ادارہ بن چکا ہے۔ کیونکہ یہ دہشت گردوں کو تحفظ فراہم کرتا ہے۔' واضح رہے 'اونروا' کے کئی مراکز پر اب تک اسرائیلی فوج بمباری کر چکی ہے اور مجموعی طور پر 'اونروا' کے 155 کارکن بمباری اور دیگر کارروائیوں سے ہلاک کیے جا چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں