دمشق میں اسرائیلی حملے کا جواب دینے کا حق محفوظ رکھتے ہیں: ایران

عالمی برادری اسرائیل کی بزدلانہ کارروائی پر سنجیدہ رد عمل ظاہر کرے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران نے گذشتہ روز شام کے دارالحکومت دمشق میں ایرانی سفارت خانے پر ہونے والے اسرائیلی فضائی حملے کے بعد اس کارروائی کاجواب دینے کا اعلان کیا ہے۔

ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان نے بین الاقوامی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ دمشق میں تہران کے سفارت خانے پر اسرائیلی بمباری پر "سنگین ردعمل" ظاہر کرے۔

خیال رہے کہ گذشتہ شام ہونے والے اس حملے میں ایرانی پاسداران انقلاب کے متعدد کمانڈر ہلاک ہو گئے تھے۔

اپنے شامی ہم منصب کے ساتھ فون پر بات کرتے ہوئے وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان نےکہا کہ اسرائیلی حملہ "تمام بین الاقوامی ذمہ داریوں اور کنونشنز کی خلاف ورزی" ہے۔ اس کارروائی کے نتائج کے لیے اسرائیل کو جوابدہ ٹھہرایا جائے گا۔ اس حملے پر بین الاقوامی سطح پر سنجیدہ اور موثر رد عمل کی ضرورت ہے۔ اسرائیل کی اس ننگی جارحیت پر تہران جوابی کارروائی کا حق محفوظ رکھتا ہے‘‘۔

دوسری جانب ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان ناصر کنعانی نے کہا کہ ایران دمشق میں اپنے سفارت خانے پر اسرائیلی حملے کے جواب میں اقدامات کرنے کا حق محفوظ رکھتا ہے۔ کنعانی نے مزید کہا کہ تہران "جارحیت کرنے والے کے خلاف ردعمل اور بدلے کا تعین خود کرے گا‘‘۔

شامی اور ایرانی میڈیا نے اطلاع دی ہے کہ ایک اسرائیلی فضائی حملے نے پیر کے روز دمشق میں ایرانی سفارت خانے سے متصل عمارت کو ملبے کے ڈھیر میں تبدیل کردیا۔ اس حملے میں کم سے کم سات ایرانی اور متعدد ایرانی اور لبنانی جنگجو ہلاک ہوئے ہیں۔مارے جانے والوں میں ایران کی القدس فورسز کے ایک سینیر کمانڈر بھی شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں