تائیوان میں لائیو نشریات میں زلزلہ، لڑکھڑاتی اینکر نے خطرے کو نظرانداز کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

تائیوان میں آنے والے زلزلے کے جھٹکوں کو ایک ٹی وی چینل کی لائیو نشریات میں دیکھا جا سکتا ہے۔ ریختراسکیل پرزلزلے کی شدت 7.2 ریکارڈ کی گئی۔ تاہم ٹی وی چینل پرنشریات پیش کرنے والی اینکر نے لڑ کھڑاتے ہوئے خطرے کونظرانداز کردیا اور ایسے ظاہر کیا جیسے کچھ ہوا نہیں۔

براڈکاسٹر کو زوردار زلزلے کے دوران اپنا توازن برقرار رکھنے کے لیے بائیں اور دائیں ہلتے ہوئے دیکھا گیا۔

اسٹوڈیو لرز اٹھا

’آئی نیوزٹی وی‘کی نشریات نے تباہ کن زلزلہ آنے کا لمحہ دکھایا، جبکہ براڈکاسٹر نے معمول کے مطابق اپنا کام جاری رکھا۔

براڈکاسٹر زلزلے کی ابتدائی وارننگ کے بارے میں بات کر رہی تھی۔اس نے خطرے کے باوجود بغیر رکے ہم آہنگی کے ساتھ اپنی بات جاری رکھی۔ سٹوڈیو لرزتا رہا اور زلزلے کے نتیجے میں چھت کی روشنی پرتشدد انداز میں حرکت کر رہی تھی۔

آج صبح تائیوان کے قریب واقع ایک سمندری علاقے میں زلزلے کی شدت 7 ڈگری ریکارڈ کی گئی تھی۔ جزیرے کے حکام نے اور جاپان اور فلپائن دونوں کو ساحلی علاقوں کے رہائشیوں کو سونامی کے خطرے سے خبردار کیا۔

خاص طور پر چونکہ یہ 25 سالوں میں جزیرے پر آنے والا سب سے زیادہ پرتشدد زلزلہ ہے، جس کی تصدیق تائی پے کے زلزلہ پیما مرکز کے ڈائریکٹر وو شن فو نے صحافیوں سے کی۔ یہ 1999 کے زلزلے کے بعد سے 25 سالوں میں سب سے زیادہ شدید زلزلہ ہے۔ پچھلے زلزلے کی شدت ریختر اسکیل پر 7.6 ریکارڈ کی گئی تھی جس کے نتیجے میں 2,400 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں