امدادی کارکنوں کی اسرائیلی بمباری سے ہلاکت، بائیڈن اور یاہو کے درمیان پہلا رابطہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی صدر جو بائیڈن نے جمعرات کے روز اسرائیلی وزیراعظم کے ساتھ اسرائیلی حملے کے کئی دنوں بعد فون پر بات کی ہے۔

پیر کے روز اسرائیلی بمباری سے سات امدادی کارکنوں کی ہلاکت کے بعد دونوں اتحادی رہنماؤوں کے درمیان یہ پہلا رابطہ تھا۔ ان سات امددای کارکنوں میں ایک امریکی شہری بھی شامل تھا۔ یہ سات امدادی کارکن 'ورلڈ سنٹرل کچن' سے وابستہ تھے۔

وائٹ ہاؤس نے امریکی صدر جو بائیڈن کو امدادی کارکنوں پر حملے کے حوالے سے اگرچہ غم و غصہ میں ہیں لیکن اس کے باوجود وہ اسرائیل کی غزہ میں جاری جنگ کی حمایت سے پیچھے نہیں ہٹ رہے۔

امریکی حکام کے ایک ذمہ دار نے دونوں اتحادیوں کی ٹیلیفونک رابطے سے قبل کہا تھا کہ کہ امریکی صدر جو بائیڈن اسرائیلی وزیر اعظم سے غزہ میں امدادی کارکنوں کی حفاظت کو یقینی بنانے اور غزہ میں خوراک کی ترسیل میں اضافے کے حوالے سے بات کریں گے۔

مشہور شیف جوز انڈریز نے بدھ کے روز 'رائٹرز' کو انٹرویو دیتے ہوئے کہ اسرائیل کا اس کے امدادی کارکنوں پر یہ حملہ پہلے سے پلان شدہ تھا۔

اسرائیلی حکام کا کہنا تھا کہ اس حملے کی تحقیقات میں کئی ہفتے لگ سکتے ہیں۔ اسرائیلی رہنماؤں نے امدادی کارکنوں کی ہلاکت کے واقعے پر افسوس کا اظہار کیا ہے اور اسے ایک غلط شناخت کی بنیاد پر حملہ قرار دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں