غزہ میں امدادی کارکنوں کے قتل پر امریکی ناراضی کے جلو میں بائیڈن ۔ یاہو متوقع ملاقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

غزہ میں انسانی بنیادوں پر کام کرنے والی تنظیم کے قافلے پر اسرائیلی حملے میں سات کارکنوں کی اموات کے بعد جمعرات کو پہلی بار امریکی صدر جو بائیڈن اور اسرائیلی وزیر اعظم بنجامین نیتن یاہو کے درمیان ٹیلی فون پر بات ہو گی۔

خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کے مطابق جو بائیڈن نے امریکہ میں قائم ورلڈ سینٹرل کچن کے ملازمین پر حملے پر غم و غصے کا اظہار کیا ہے، جو قحط کے دہانے پر موجود غزہ کے شہریوں میں انتہائی ضروری خوراک تقسیم کر رہے تھے۔

ایک امریکی عہدیدار نے بدھ کو اے ایف پی کو بتایا: ’میں اس بات کی تصدیق کر سکتا ہوں کہ صدر بائیڈن اور وزیر اعظم نتن یاہو کل بات کریں گے۔‘

اس فون کے متعلق معلومات ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب بائیڈن نے کہا تھا کہ وہ اس مہلک حملے کے باعث ’برہم اور دل شکستہ‘ ہیں، جس میں ایک امریکی اور کینیڈین شہریت رکھنے والے شہری، تین برطانوی، ایک پولینڈ، ایک آسٹریلوی اور ایک فلسطینی شہری کی موت ہوئی۔

بائیڈن کی بڑھتی ہوئی تنقیدی زبان اور اسرائیل سے امدادی کارکنوں اور شہریوں کے تحفظ کے لیے مزید کام کرنے کا مطالبہ اس حوالے سے بڑھتی ہوئی مایوسی کو ظاہر کرتا ہے کہ اسرائیل حماس کے ساتھ اپنے تنازعے کو کس طرح سنبھال رہا ہے۔

اسرائیل نے امدادی کارکنوں پر حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے اسے ایک غلطی قرار دیا ہے اور وزیر دفاع یوآو گیلنٹ نے مسلح افواج کو ہدایت کی ہے کہ وہ ’امدادی کام کرنے والی بین الاقوامی تنظیموں کے ساتھ کھلا اور شفاف رابطہ برقرار رکھیں۔‘

ورلڈ سینٹرل کچن کا کہنا ہے کہ اس نے اسرائیلی افواج کو اپنی نقل و حرکت کے بارے میں بتایا تھا۔ اس حوالے سے امریکی صدر جو بائیڈن نے اس بات پر زور دیا ہے کہ جس حملے میں ورلڈ سینٹرل کچن برانڈ کی گاڑیوں کو نشانہ بنایا گیا، وہ کوئی ’پہلا واقعہ‘ نہیں ہے۔

اقوام متحدہ کے ایک کوآرڈینیٹر کے مطابق غزہ میں تقریباً چھ ماہ سے جاری اسرائیلی جارحیت میں کم از کم 196 امدادی کارکن مارے جا چکے ہیں، جو ایک سال میں کسی بھی دوسرے تنازعے میں ہونے والی اموات سے تین گنا زیادہ ہے۔

امریکی ناراضی میں اضافہ

دوسری جانب پینٹاگون کا کہنا ہے کہ امریکی وزیرِ دفاع لائیڈ آسٹن نے بدھ کے روز اسرائیل پر زور دیا کہ وہ "بار بار رابطہ کاری کی ناکامیوں کے بعد" غزہ میں امدادی کارکنوں اور فلسطینی شہریوں کے تحفظ کے لیے ٹھوس اقدامات کرے جب انہوں نے جمعرات کو اسرائیلی وزیرِ دفاع یوآو گیلنٹ سے بات کی۔

ان اقدامات کا مطالبہ ایک اسرائیلی حملے کے بعد کیا گیا جس میں اس ہفتے غزہ میں ورلڈ سینٹرل کچن کے سات کارکنان ہلاک ہو گئے۔

دونوں دفاعی رہنما کے درمیان کال کے بعد ایک بیان میں کہا گیا، "سیکرٹری آسٹن نے ورلڈ سینٹرل کچن کے انسانی امدادی قافلے پر اسرائیلی حملے پر اپنے غم و غصے کا اظہار کیا جس میں ایک امریکی شہری سمیت سات امدادی کارکنان ہلاک ہوئے۔"

پینٹاگون نے کہا، آسٹن نے گیلنٹ پر یہ بھی زور دیا کہ وہ "تیز اور شفاف" تحقیقات کریں، نتائج کا عوامی طور پر اشتراک کریں اور ذمہ داروں کو احتساب کے کٹہرے میں لائیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں