امدادی کارکنوں کی ہلاکت پر غیر جانبدارانہ تحقیقاتی کمیشن بنایا جائے: ورلڈ سنٹرل کچن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی ادارے 'ورلڈ سینٹرل کچن' نے مطالبہ کیا ہے کہ غزہ میں اسرائیلی بمباری سے ہونے والی سات امدادی کارکنوں کی ہلاکتوں کے بارے تحقیقات کے لیے غیر جانبدارانہ کمیشن قائم کیا جائے، کیونکہ اسرائیلی فوج اپنی غلطی یا ناکامی کے بارے میں خود قابل بھروسہ تحقیقات نہیں کرسکتی ہے۔

خیال رہے اسرائیلی فوج جمعہ کے روز ہی ساتھ امدادی کارکنوں کی ہلاکت کے بارے میں اپنی تحقیقاتی رپورٹ منظر عام پر لائی ہے۔ سات امدادی کارکنوں کی ہلاکت پیر کے روز ہوئی تھی۔ اسرائیلی فوج کی تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق امدادی کارکنوں کی ہلاکت تین ڈرون حملوں کے نتیجے میں ہوئی ہے۔ یہ ڈرون حملے اسرائیلی فوج نے کیے تھے۔

تاہم امریکی ادارے 'ورلڈ سینٹرل کچن ' نے اسرائیلی فوج کی اس بارے میں تحقیقتی رپورٹ کو مسترد کر دیا ہے اور ایک غیر جانبدار کمیشن قائم کرنے کے مطالبے کے ساتھ ہی یہ بھی کہا ہے کہ 'اگر ایک منظم تبدیلی کی کوشش نہیں کیا جائے گی تو اس طرح کی ناکامی والے افسوسناک واقعات ییش آتے رہیں گے۔ جو زیادہ دکھی خاندانوں کو سامنے لائیں گے اور زیادہ بار معافی مانگنے کا موقع بنتا رہے گا۔'

امریکی 'ورلڈ سینٹرل کچن' کے بانی اور سربراہ جوزن اینڈریس نے کہا ہے کہ 'اسرائیلی حملے میں سات امدادی کارکنوں کو ٹارگٹ کر کے ہلاک کیا گیا تھا۔' اس واقعے کے بعد امریکہ سمیت دوسرے اسرائیلی اتحادیوں نے بھی اسرائیل سے وضاحت طلب کی ہے۔ جبکہ عالمی رائے عامہ نے اسرائیلی فوج کی مذمت کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں