کیٹ مڈلٹن کی زندگی میں نیا جھٹکا، والدین کو قرضوں نے پریشان کردیا

شاہی خاندان میں شادی کرنے سے پہلے کیٹ مڈلٹن نے پارٹی پیسز کے پروجیکٹ مینیجر کے طور پر وقت گزارا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

کیٹ مڈلٹن کے والدین کارول اور مائیکل مڈلٹن کو ان کی کمپنی ’’پارٹی پیسز‘‘ کے کاروبار کی وجہ سے ایک نئے دھچکے کا سامنا ہے۔ اس سے قبل کچھ دن قبل ہی انہیں ایک دھچکا اس وقت لگا تھا جب انہیں معلوم ہوا تھا کہ ان کی بیٹی کیٹ شہزادی آف ویلز کو کینسر ہے۔ ان کی کمپنی اپنی مالی دیوالیہ پن سے نمٹنے کے لیے تنظیم نو کے عمل سے گزر رہی تھی لیکن اس تنظیم نو کو بڑا دھچکا لگا ہے۔

’’پارٹی پیسز‘‘ کی بنیاد مڈلٹن فیملی نے 1987 میں رکھی تھی۔ یہ کمپنی گزشتہ جون میں 2.5 ملین پاؤنڈ سے زیادہ کے قرضوں کے ساتھ بیرونی انتظامیہ کے ہاتھوں میں چلی گئی۔ کمپنی کے ڈیفالٹ سے نمٹنے کے لیے کمیشن بنایا گیا تھا - لیکن اب وہ تمام قرضوں کو پورا کرنے سے قاصر ہیں۔

’’پارٹی پیسز‘‘ کی بنیاد کارول اور مائیکل مڈلٹن نے اپنی شادی کے سات سال بعد 1987 میں رکھی تھی۔ کمپنی نے پارٹی کا سامان فروخت کیا اور ایک بار اس قدر کامیاب رہی کہ حاصل ہونے والی رقم سے شہزادی کیٹ اور اس کے بہن بھائیوں پیپا اور جیمز کو ولٹ شائر کے ایک بورڈنگ سکول، مارلبورو کالج میں بھیجنے میں مدد ملی تھی۔

74 سالہ مائیکل نے 1989 میں پارٹی پیسز میں اپنی اہلیہ کے ساتھ کل وقتی طور پر شامل ہونے کے لیے برٹش ایئرویز میں بطور ڈائریکٹر اپنی ملازمت چھوڑ دی تھی۔ 1995 میں کمپنی کی ترقی کی وجہ سے اس کے ہیڈ کوارٹرز کو برک شائر کے علاقے اشیمپسٹیڈ کومن پر واقع فارم عمارتوں کے ایک گروپ میں منتقل کرنے کی ضرورت پڑی۔

شاہی خاندان میں شادی کرنے سے پہلے کیٹ مڈلٹن نے پارٹی پیسز کے پروجیکٹ مینیجر کے طور پر کچھ وقت گزارا۔ انہوں نے پرنس ولیم سے 2011 کی شاہی شادی سے پہلے کام کرنا چھوڑ دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں