سابق امریکی ہاؤس سپیکر نے بھی اسرائیل کو اسلحہ سپلائی روکنے کا مطالبہ کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

نینسی پیلوسی اس مطالبے کا حصہ بن گئی ہیں جس میں صدر جو بائیڈن سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ اسرائیل کو اسلحہ نہ بھیجا جائے۔ سابق سپیکر ایوان نمائندگان نینی پیلوسی صدر جو بائیڈن کی کٹر حامی کا اسرائیل کو اسلحہ سپلائی روکنے کا مطالبہ کرنا غیرمعمولی اہمیت کا حامل ہے۔ خیال رہے پیلوسی صدر جو بائیڈن کی غیر معمولی حامی ہیں۔

میمسی پیلوسی نے اس خط پر جمعہ کے دن دستخط کیے ہیں اور زور دیا ہے کہ اسرائیل کو اسلحہ کی سپلائی روک دی جائے۔

اسرائیل 7 اکتوبر سے غزہ میں حماس کے خلاف جوابی کارروائی کے طور پر جنگ کر رہا ہے۔ اس کی غزہ میں جنگ کے نتیجے میں اب تک 33 ہزار سے زیادہ فلسطینی قتل ہو چکے ہیں۔ جن میں فلسطینی خواتین اور بچوں کی تعداد زیادہ ہے۔ اسرائیل یہ لڑائی غزہ کی تنگ ساحلی پٹی پر لڑ رہا ہے۔

پیلوسی کے دستخط سے یہ بات ثابت ہوگئی ہے کہ ڈیموکریٹس پارٹی کے اہم اور مین سٹریم لیڈر بھی اسی سوچ کو اختیار کرتے جا رہے ہیں جو اس سے پہلے امریکہ کے عام لوگوں، نوجوانوں اور ڈیموکریٹس کے کئی ارکان کانگریس میں پائی جاتی تھی۔

خط میں جوبائیڈن سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ امریکہ 7 رکنی امدادی ٹیم کی ہلاکت کے واقعے کی اپنے طور پر تحقیققات کرائے۔ یہ 7 امدادی کارکن 'ورلڈ سینٹرل کچن' نامی امریکی ادارے سے وابستہ تھے۔

ڈیموکریٹک پارٹی میں امریکہ کی اسرائیل کے بارے میں جاری پالسیی کے متعلق تبدیلی کی یہ لہر 'ورلڈ سینٹرل کچن' کے کارکنوں کی ہلاکت کے بعد شدت اختیار کر گئی ہے۔ اس خط پر پیلوسی سمیت 37 ڈیموکریٹ نمائندوں کے دستخط شامل ہو گئے ہیں۔ جن میں بار برا لی، راشدہ طلائب اور الیگزینڈرا کیسیو کوارٹز شامل ہیں۔

اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ تحقیقات کے نتیجے میں دو افسروں کو معبطل کر دیا ہے۔ 7 امدادی کارکنوں کی ہلاکت کو ہم سنگین غلطی تسلیم کرتے ہیں۔ صدر جوبائیڈن نے نیتن یاہو سے فون پر بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ شہریوں کا تحفظ یقینی بنایا جائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں