عدن کے جنوب مغرب میں 59 سمندری میل کی مسافت پر بحری جہاز پر حملے کی اطلاع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

یمن میں عدن کی بندرگاہ کے نزدیک اتوار کے روز ایک میزائل حملہ کیا گیا ہے۔ یہ کسی جہاز پر 24 گھنٹوں کے دوران دوسرا حملہ ہے۔

تاہم کسی گروہ یا تنظیم نے اس حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔ البتہ یہ بحیرہ احمر میں جہازوں کو نشانہ بنانے کی حوثی مہم کے ساتھ جڑا ہوا واقعہ نظر آتا ہے۔

برطانوی سیکیورٹی ایجنسی 'یو کے ایم ٹی او' کے مطابق میزائل نے جہاز کے نزدیک پانیوں میں بھی اپنا اثر دکھایا۔ لیکن کسی جہاز کو ابھی تک کسی قسم کے نقصان کی اطلاع نہیں ہے۔

سیکیورٹی فرم 'ایمبری' کے مطابق جہازوں پر مسلسل دوسرے دن ہونے والے اس حملے کی وجہ سے جہازوں اور کشتیوں کو خبردار کر دیا گیا ہے کہ وہ ہوشیار رہیں کہ مزید حملے کا بھی خطرہ ہو سکتا ہے۔

واضح رہے یہ حملہ محض اس واقعہ کے چند گھنٹے بعد کیا گیا ہے جس میں ایک جہاز پر جنوب مغربی یمنی بندرگاہ حدیدہ کے پاس سے دو میزائل داغے گئے تھے۔ 'یو کے ایم ٹی او' کے مطابق ایک میزائل کو راستے میں روک لیا گیا تھا۔

ایرانی حمایت یافتہ حوثی پچھلے کئی ماہ سے بحیرہ احمر میں بحری جہازوں کو نشانہ بنا رہے ہیں۔ ان کے یہ حملے امریکی قیادت میں بنے اتحاد کے سخت کارروائیوں کے باوجود جاری ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں