چھ فی صد سعودی شہری عید الفطر کا دن اپنی ڈیوٹی پر گزاریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

نیشنل سینٹر فار پبلک اوپینین پولز نے ایک عام سروے شائع کیا ہے جس میں عید الفطر کی صبح وقت گذارنے کے بارے میں شہریوں کی رائے کا اظہار کیا گیا۔

سروے سے معلوم ہوا کہ تقریباً 2 فی صد سعودی عید کی نماز کے فوراً بعد سوجاتے ہیں تاکہ ان کی نیند کی کمی پوری ہوسکے جب کہ 6 فی صد سعودی عید الفطر ڈیوٹی کے دوران گذاریں گے۔ وہ عید کے دوران اپنے کام کی رفتار کو جاری رکھیں گے۔

سروے کے مطابق 41 فی صد شہری اپنے قریبی اقارب سے ملاقات کریں گے جبکہ سب سے زیادہ تعداد میں شہری اپنے چھوٹے خاندانوں کے ساتھ بیوی بچوں اور والدین کے ساتھ گذارتے ہیں۔ اس سروے میں تقریباً 842 افراد نے شرکت کی۔ شرکاء میں تقریباً 64 فیصد مرد اور باقی تقریباً 36 فیصد خواتین تھیں۔

اس کے علاوہ جنرل انٹرٹینمنٹ اتھارٹی نے عید الفطر کے پہلے دن آتش بازی شروع کرنے کے لیے علاقوں کو نشاندہی کی ہے۔عید 2024 کی سرگرمیوں کے حصے کے طور پر مملکت کے تمام خطوں کے آسمانوں پر آتش بازی کے مظاہر دیکھے گئے۔

شام کے نو بجے آتش بازی دیکھنے سے لطف اندوز ہونے کے لیے اتھارٹی کی طرف سے جن علاقوں کو نامزد کیا گیا ہے ان میں بلیوارڈ سٹی کے اسکوائر کے علاقے میں واقع شہر ریاض، کورنیشے پر واقع واٹر ٹاور، الخبر شہر اور پرمنیڈ جہاں آتش بازی کا مظاہرہ دو دن تک جاری رہے گا شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں