ایرانی صدر 22 اپریل کو پاکستان کے دورے پر اسلام آباد پہنچیں گے

ڈاکٹر محمد ابراہیم رئیسی کے دو روزہ دورے کے دوران پاک ایران گیس پائپ لائن اور ممکنہ آزاد تجارتی سمجھوتہ جیسے امور پر بات چیت متوقع ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کے صدر ڈاکٹر محمد ابراہیم رئیسی 22 اپریل کو اعلی اخیتاراتی وفد کے ہمراہ پاکستان کے دورے پر اسلام آباد پہنچیں گے۔ اطلاعات کے مطابق ایرانی صدر کے دو روزہ دورے کے حوالے سے انتظامات کے لیے ان کی سکیورٹی ٹیم اسلام آباد پہنچ چکی ہے اور متعلقہ حکام سے ملاقاتیں کر رہی ہے۔

نجی ٹی وی نے ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ ایرانی صدر کے دورہ پاکستان میں طے پانے والے معاہدوں اور مفاہمت کی یادداشتوں کو پہلے ہی حتمی شکل دی جا چکی ہے۔ ایرانی صدر اپنے پاکستانی ہم منصب آصف علی زرداری کی دعوت پر پاکستان کا دورہ کر رہے ہیں۔

ایرانی صدر کے اسلام آباد میں صدر آصف علی زرداری کے ساتھ باضابطہ ملاقات و مذاکرات بھی ہوں گے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ صدر آصف علی زرداری ایرانی ہم منصب ڈاکٹر محمد ابراہیم رئیسی کے اعزاز میں پر تکلف ضیافت کا بھی اہتمام کریں گے جبکہ ایرانی صدر وزیر اعظم شہباز شریف کے ساتھ بھی ملاقات کریں گے۔

ایرانی صدر کے دورہ پاکستان میں دونوں ممالک کے درمیان معاشی تجارتی تعاون کے مختلف سمجھوتوں پر دستخط کیے جائیں گے۔ سفارتی ذرائع کا کہنا ہے کہ ایرانی صدر کے دورے میں پاک ایران گیس پائپ لائن اور ممکنہ آزاد تجارتی سمجھوتہ بھی اہم ترین نکات کے طور پر شامل ہیں۔

ایرانی صدر ڈاکٹر ابراہیم رئیسی کا صدارت سنبھالنے کے بعد یہ پہلا غیر ملکی دورہ ہو گا جبکہ شہباز شریف حکومت کے برسر اقتدار آنے کے بعد ایرانی صدر پاکستان کا دورہ کرنے والے پہلے غیر ملکی سربراہ مملکت ہیں۔

یاد رہے کہ پاک ایران کشیدگی اور ایران اسرائیل تنازع کے بعد ایرانی صدر کا یہ پہلا غیر ملکی دورہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں