ایران کے ساتھ براہ راست جنگ نہیں چاہتے: پینٹاگان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی محکمہ دفاع (پینٹاگان) نے کہا ہے کہ اسرائیل کا دفاع واشنگٹن کی اولین ترجیح ہے اور ایران کو جواب دینے کا فیصلہ اسرائیل پر منحصر ہے۔

پینٹاگان کی ترجمان سبرینا سنگھ نے کہا کہ ان کا ملک مشرق وسطیٰ میں کشیدگی نہیں چاہتا۔ انہوں نے اس بات کی بھی تصدیق کی کہ امریکہ ایران کے ساتھ براہ راست جنگ نہیں کرنا چاہے گا۔

’’جواب دینے کے سوا کوئی چارہ نہیں‘‘

امریکی وزیر دفاع لائیڈ آسٹن نے اتوار کی شام اپنے اسرائیلی ہم منصب یوآو گیلنٹ کے ساتھ ایک فون کال میں معاملات کو کنٹرول کرنے اور پر سکون رکھنے کی امریکی کوششوں کے تناظر میں اسرائیلی ردعمل کی نوعیت پر تبادلہ خیال کیا۔

امریکی ’ایکسیس‘ نیوز ویب سائٹ نے حکام کے حوالے سے تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ گیلنٹ نے امریکی وزیر دفاع کو مطلع کیا کہ جواب دینے کے سوا کوئی چارہ نہیں ہے اور بیلسٹک میزائلوں اور ڈرونز کی لانچنگ کے سامنے خاموش رہنا ممکن نہیں ہے۔

گذشتہ چند دنوں کے دوران اسرائیلی فوجی اور سیاسی حلقوں میں ردعمل کے وقت اور نوعیت کے بارے میں بہت سی بحث دیکھنے میں آئی۔ جب کہ کچھ عہدیداروں نے بغیر کسی تاخیر کے براہ راست اور فوری جواب دینے کا مطالبہ کیا۔ بعض نے ایران کو سوچ سمجھ کر جواب دینے کی تجویز پیش کی۔

جوابی کارروائی کے منظر نامے

دوسری جانب عسکری قیادت کی طرف سے پیش کردہ ردعمل کے ایک سے زائد منظر نامے پیش کیے گئے۔ ایران کے اندر موجود مقامات پر براہ راست حملوں اور ایران سے باہر تہران کی پراکسیز کو نشانہ بنانے کی تجاویز بھی شامل ہیں۔

اسرائیل نے عسقلان شہر کی فضا میں ایرانی میزائل ناکارہ بنائے: رائیٹرز
اسرائیل نے عسقلان شہر کی فضا میں ایرانی میزائل ناکارہ بنائے: رائیٹرز

منگل ایرانی صدر ابراہیم رئیسی نے اس عزم کا اظہار کیا کہ ان کے ملک کی سرزمین پر کسی بھی قسم کی دراندازی خوفناک ہوگی اور اس کا فوری جواب دیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں