ایران پر اسرائیلی حملے کے تناظر میں ایئرلائنز کے فضائی راستے تبدیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

فلائٹ ٹریکنگ ڈیٹا سے پتہ چلا ہے کہ ایران پر اسرائیلی حملے کے بعد فضائی حدود اور ہوائی اڈے کی بندش کے جواب میں مختلف ممالک کی ایئر لائنز نے تیزی سے ایران کے اوپر پرواز کے راستے تبدیل کر دیئے ہیں، پروازوں کا رخ متبادل ہوائی اڈوں کی طرف موڑ دیا یا ہوائی اڈے کی بندش کے پیشِ نظر جمعہ کو ہوائی جہازوں کو ان کی روانگی کے مقامات پر واپس بھیج دیا۔

فلائٹ ٹریکنگ ویب سائٹ فلائٹ ریڈار 24 کے مطابق ایران نے حملے کے بعد تہران، شیراز اور اصفہان میں اپنے ہوائی اڈے بند کر دیئے اور چند گھنٹوں کے لیے اپنی فضائی حدود کے مغربی حصے سے پروازیں کلیئر کر دیں۔

0445 جی ایم ٹی تک ہوائی اڈے اور فضائی حدود دوبارہ کھل چکے تھے اور یو ایس فیڈرل ایوی ایشن ایڈمنسٹریشن کے ڈیٹا بیس پر پوسٹ کردہ بندش کا نوٹس ہٹا دیا گیا تھا۔

ہوائی اڈوں کے دوبارہ کھلنے سے پہلے فلائی دبئی نے کہا کہ اس نے جمعہ کو ایران کے لیے اپنی پروازیں منسوخ کر دیں۔ اس نے کہا کہ اس کی پہلے جانے والی پروازوں میں سے ایک دبئی واپس چلی گئی۔

فلائٹ ریڈار 24 نے دکھایا کہ روم سے تہران جانے والی ایران ایئر کی پرواز کو ترکیہ کے شہر انقرہ کی طرف موڑ دیا گیا۔

ٹریکنگ ویب سائٹ نے دکھایا کہ ایمریٹس، فلائی دبئی، ٹرکش ایئر، وِز ایئر ابوظہبی اور بیلاویہ اُن ایئر لائنز میں شامل تھیں جو ایران کی فضائی حدود کے اس حصے پر پرواز کرتے رہے جو جمعہ کے اوائل میں حملے کے بعد ابتدائی گھنٹوں میں کھلے رہے۔

فلائی دبئی نے ایک بیان میں کہا، "ہم صورتِ حال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہیں اور متعلقہ حکام کے ساتھ مشاورت کے بعد اپنی پرواز کے راستوں میں تبدیلیاں کریں گے۔"

متحدہ عرب امارات میں ریکارڈ بارش کے بعد ایران میں فضائی حدود اور ہوائی اڈے کی بندش نے دبئی میں قائم شدہ مسافر برداروں کے لیے ایک مشکل ہفتے کو مزید مشکل بنا دیا۔

منگل سے دبئی سے جانے اور آنے والی 1,478 پروازیں منسوخ کی گئی ہیں جو تمام پروازوں کا تقریباً 30 فیصد ہیں۔

کئی مغربی اور ایشیائی ایئرلائنز اسرائیلی حملے سے پہلے ہی ایران اور اس کی فضائی حدود سے گریز کر رہی تھیں جو اسرائیل پر ایران کے میزائل اور ڈرون حملے کے چند ہی دن بعد کیا گیا۔

جرمنی کی لفتھانزا نے بدھ کے روز خطے میں جاری سکیورٹی خدشات کا حوالہ دیتے ہوئے تہران کے لیے پروازوں کی معطلی کو مہینے کے آخر تک بڑھا دیا۔

آسٹریلیا کی قنطاس ایئرویز نے ہفتے کے روز کہا کہ وہ مشرقِ وسطیٰ کے سکیورٹی خدشات کے پیشِ نظر پرتھ اور لندن کے درمیان پروازوں کا راستہ تبدیل کر رہا تھا اور چونکہ وہ ایران کی فضائی حدود سے گریز کرے گا تو ایندھن بھرنے کے لیے سنگاپور میں سٹاپ کیا جائے گا۔

تائیوان کی چائنہ ایئرلائنز نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ وہ "صورتِ حال پر مسلسل توجہ مرکوز کیے ہوئے ہے اور یہ امریکی فیڈرل ایوی ایشن ایڈمنسٹریشن (ایف اے اے) اور یورپی یونین ایوی ایشن سیفٹی ایجنسی کی سفارشات کے مطابق موزوں ترین راستوں کی منصوبہ بندی کرے گا۔"

ایران کے لیے پرواز نہ کرنے والی اتحاد ایئرویز نے کہا، وہ "سکیورٹی اور فضائی حدود کی تازہ صورتِ حال کی مسلسل نگرانی کر رہا ہے۔ حفاظت ہمیشہ ہماری اولین ترجیح ہوتی ہے اور ہم کبھی بھی پرواز نہیں چلائیں گے جب تک کہ ایسا کرنا محفوظ نہ ہو۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں