داعش امریکہ پرحملہ کرسکتی ہے:’ایف بی آئی‘ کا انتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سات اکتوبر کو غزہ کی پٹی میں شروع ہونے والی جنگ کے بعد سے مشرق وسطیٰ میں بڑھتی ہوئی کشیدگی اور خاص طور پر یورپ میں دہشت گردانہ حملوں پر بین الاقوامی خدشات کے بعد امریکہ نے بھی داعش کے حملوں کے خطرات پر خبردار کیا ہے۔

’ایف بی آئی‘ کے ڈائریکٹر کرسٹوفر رے نے تصدیق کی کہ ماسکو میں گذشتہ ماہ ہونے والے حملے کی طرح کے حملے کے امکان کے بارے میں تشویش بڑھ رہی ہے، جس کی ذمہ داری داعش خراسان نے قبول کی تھی۔

’این بی سی‘ کے ساتھ ایک انٹرویو میں رے نے کہا کہ سات اکتوبر سے دہشت گردی کا خطرہ بڑھ گیا ہے، جس نے انفرادی عناصر یا چھوٹے گروہوں کی موجودگی کی نشاندہی کی جو غزہ پر اسرائیلی جنگ کی وجہ سے امریکہ کے اندر انتہا پسند بن گئے تھے۔

انہوں نے ایک عوامی مقام پر مربوط دہشت گردانہ حملے کے بڑھتے ہوئے خدشات کی طرف بھی اشارہ کیا، جب کہ گذشتہ دہائی کے دوران انٹیلی جنس حکام نے اس طرح کے امکان کو مسترد کر دیا تھا۔

داعش خراسان
داعش خراسان

گذشتہ ماہ روس میں ہونے والے ہونے والے دہشت گردانہ حملے کے نتیجے میں کروکس شہر میں موجود ایک نائٹ کلب میں تقریباً 150 افراد ہلاک اور 285 کے زخمی ہوگئے تھے۔

اس حملے کی ذمہ داری’داعش خراسان‘ نامی گروپ نے قبول کی تھی۔اس واقعے کے بعد یورپی ممالک میں سکیورٹی الرٹ کر دی گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں