ترکیہ نے اسرائیل سے تجارتی تعلقات ترک کر دیے: بلومبرگ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

غزہ میں جاری جارحیت کے باعث ترکیہ نے جمعرات کو اسرائیل سے تجارتی تعلقات ترک کرنے کا اعلان کر دیا۔

بلوم برگ نیوز نے دو ترک عہدیداروں کے حوالے سے خبر دی ہے کہ ترکیہ نے جمعرات سے اسرائیل کو اور وہاں سے تمام برآمدات اور درآمدات روک دی ہیں۔

اسرائیل کے وزیر خارجہ نے ردعمل میں کہا کہ ترک صدر طیب ایردوآن اسرائیلی درآمدات اور برآمدات کے لیے اپنی بندرگاہوں کو بند کر کے معاہدے کو توڑ رہے ہیں۔

بدھ کو ترکیہ کے وزیر خارجہ خاقان فیدان نے کہا تھا کہ ترکی عالمی عدالت انصاف میں اسرائیل کے خلاف جنوبی افریقہ کی نسل کشی کے مقدمے میں فریق بنے گا۔

انقرہ میں انڈونیشیا کے وزیر خارجہ ریٹنو مارسودی کے ساتھ ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں فیدان نے کہا تھا کہ ترکیہ ہر صورت میں فلسطینی عوام کی حمایت جاری رکھے گا۔

جنوبی افریقہ کی جانب سے اسرائیل پر غزہ میں ریاستی نسل کشی کا الزام عائد کیے جانے کے بعد عالمی عدالت انصاف نے جنوری میں اسرائیل کو حکم دیا تھا کہ وہ نسل کشی کنونشن کے تحت آنے والے کسی بھی اقدام سے باز رہے اور اس بات کو یقینی بنائے کہ اس کی افواج فلسطینیوں کے خلاف نسل کشی نہ کریں۔

جنوری میں صدر رجب طیب ایردوآن نے کہا تھا کہ ترکیہ عالمی عدالتِ انصاف میں کیس کے لیے دستاویزات فراہم کر رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں