امریکی سی آئی اے کے ڈائریکٹر ثالثی مذاکرات کا حصہ بننے کے لیے قاہرہ پہنچ گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی سی آئی اے کے ڈائریکٹر ولیم برنز اسرائیل اور حماس کے درمیان ثالث ملکوں کی موجودگی میں ہونے والے مذاکراتی عمل کا حصہ بننے کے لیے قاہرہ پہنچ گئے۔ وہ گزشتہ روز جمعہ کے دن قاہرہ پہنچے۔ جہاں حماس کی قیادت ثالث ملکوں کی طرف سے پیش کردہ نئی تجاویز کا جائزہ لینے کے بعد اس مذاکراتی عمل کا حصہ بننے کاارادہ رکھتی ہے۔

سی آئی اے ڈائریکٹر کی قاہرہ آمد کے بارے میں جمعہ کے روز مصر کے کم از کم تین سیکیورٹی حکام نے تصدیق کی ہے۔ علاوہ ازیں ان سیکیورٹی حکام میں قاہرہ ایئرپورٹ سے متعلق ذرائع بھی شامل ہیں۔

واضح رہے کہ مصر جو اگلے مذاکراتی دور کا میزبان ہے۔ قطر اور امریکہ کے ساتھ مل کر ثالثی کی کوششیں کر رہا ہے۔ تاکہ اسرائیل اور حماس کے درمیان غزہ جنگ سے متعلق معاہدہ طے پا جائے۔ جس کے نتیجے میں جنگ بندی کے ساتھ ساتھ اسرائیلی یرغمالیوں کی رہائی بھی ممکن ہو جائے۔

تاہم سی آئی اے کے حکام نے اپنے ڈائریکٹر کی قاہرہ آمد کے بارے میں رابطہ کرے پر تبصرہ سے انکار کر دیا ہے اور کہا ہے کہ اپنے حکام کی آمد و رفت اور شیڈول کو پبلک کرنے کی پالیسی نہیں رکھتے۔

واضح رہے مصر نے مذاکراتی عمل کو اپنی میزبانی میں سرگرم کرنے کی ایک بار پھر کوشش کی ہے۔ قاہرہ کا یہ مؤقف ہے کہ اسرائیل کی زمینی فوجوں کو رفح پر حملہ نہیں کرنا چاہیے جہاں 10 لاکھ سے زیادہ پناہ گزین موجود ہیں۔

دوسری جانب ثالث ملکوں کا کہنا ہے کہ وہ حماس کی طرف سے نئی تجاویز پر جواب کے منتظر ہیں اور انہیں جوابات کی روشنی میں مذاکرات کو آگے بڑھایا جاسکے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں