کیا لندن کے میئرصادق خان الیکشن ہارنے سے خوف زدہ ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستانی نژاد لندن کے میئر صادق خان نے جمعے کی شام برطانوی لیبر پارٹی سے تعلق رکھنے والے اپنے حامیوں کو خبردار کیا ہے کہ ان کی حریف کنزرویٹو پارٹی سے تعلق رکھنے والی 69 سالہ سوزن ہال چپکے سےالیکشن جیت کرحیران کن نتائج حاصل کر سکتی ہیں۔ ان کے اس خدشے کا اظہار کیا جس کا میڈیا میں تذکرہ کیا جاتا ہے۔

چون سالہ خان لندن میں تارکین وطن کے والدین کے ہاں پیدا ہوئے تھے۔انہوں نے جمعرات کی شام سات بجے سے پہلے "ایکس" ویب سائٹ پر لکھے گئے ایک انتباہی بیان میں اپنی حریف کی ممکنہ کامیابی کی فوری وجہ کا انکشاف کیا جس میں انہوں نے کہا کہ "ٹرن آؤٹ کی ممکنہ کم شرح ظاہرکرتی ہے کہ لندن کے میئر کے عہدے کی اہم دوڑ میں کم ووٹوں کی وجہ سےکنزرویٹو پارٹی کے پاس جیت کا ایک موقع ہے۔

انہوں نے اپنے حامیوں پر زور دیا کہ وہ جمعرات کی شام دس بجے بند ہونے سے پہلے پولنگ میں جائیں، یا پھر کنزرویٹو پارٹی کے ڈراؤنے خواب کے لیے جاگنے کا خطرہ مول لیں۔

خان نے 4 سال قبل کنزرویٹو پارٹی کے امیدوار شان بیلی کو 5 فیصد سے بھی کم فرق سے اپنی دوسری مدت میں کامیابی حاصل کی۔ جہاں تک اس سال کی دوڑ کے لیے رائے عامہ کے تازہ ترین جائزوں کا تعلق ہےتو ان میں خان کی ممکنہ جیت کی پیش گوئی جا رہی۔ ان میں سے اکثر نے اشارہ دیا کہ وہ اپنے مدمقابل سوسن ہال کے مقابلے میں بڑے مارجن سے جیتیں گے جو کہ ساونتا مارکیٹنگ اینڈ ریسرچ فاؤنڈیشن کی طرف سے کرائے گئے تازہ ترین رائے شماری سے ظاہر ہے ۔اس کے نتائج سے اندازہ ہوتا ہےصادق خان10 پوائنٹس سے آگے جا سکتے ہیں۔ وہ 42 فی صد ووٹوں کے مقابلے میں آگے جا سکتے ہیں۔ جب کہ ان کی حریف 32 فی صد ووٹ حاص کرسکتی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں