برطانیہ کی عاشق مزاج ٹیچر کے اپنے دو شاگردوں کے ساتھ تعلقات،ایک سے بچی بھی پیدا ہوگئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

برطانوی شہر مانچسٹر کی ایک عدالت نے منگل کوایک منفرد کیس کی سماعت شروع کی ہے۔ اس کس کی مرکزی ملزمہ تیس سالہ ریبیکا جوانس نامی ایک انگلش ٹیچر ہیں جن کے اپنے دو شاگردوں جن کی عمریں پندرہ سال کے لگ بھگ ہیں کے ساتھ غیرقانونی تعلقات قائم رہے ہیں۔ یہ خاتون ان میں سے ایک لڑکے کےساتھ تعلق کے دوران حاملہ بھی ہوئی جس کی ایک بچی پیدا ہوئی۔

جوائنس کو کچھ عرصہ قبل ایک پندرہ سالہ شاگرد کے ساتھ غیرقانونی تعلقات کی وجہ سے گرفتار کیا تھا۔ گرفتاری کے بعد اس کی ضمانت ہوئی تواس نے ایک دوسرے لڑکے کے ساتھ خفیہ معاشقہ چلایا جس سے اس کی ایک بچی بھی ہوگئی۔ اب اس خاتون کو دوبارہ گرفتار کیا گیا ہے۔ اب اس پر چھ مختلف نوعیت کے الزامات کے تحت مقدمہ چلایا جا رہا ہے۔
عدالت کو بتایا گیا کہ ریبیکا جوائنس نامی خاتون ٹیچر نے پہلے طالب علم جس کی عمر پندرہ سال تھی کے ساتھ ناجائز تعلق قائم کیا۔ اسکینڈل سامنے آنے کے بعد اس کے خلاف عدالت میں مقدمہ چلایا گیا اور کچھ عرصہ قید کے بعد ضمانت پر اسے رہا کیا گیا۔ رہائی کے بعد اس نے ایک اور پندرہ سالہ لڑکے کے ساتھ تعلقات قائم کیے۔ اس دوسرے لڑکے سےاس کی ایک بچی بھی پیدا ہوئی۔

اپنے والدین کے ساتھ کمرہ عدالت سے نکلتےہوئے
اپنے والدین کے ساتھ کمرہ عدالت سے نکلتےہوئے

دونوں کے درمیان "مباشرت" پیغامات

پراسیکیوٹر نے عدالت میں جو کہا پہلے طالب علم نے اپنی والدہ کو بتایا کہ وہ ایک دوست کے گھر ایک دن سے زیادہ وقت گزارے گا مگر وہ ایک موقع پر باہر گیا تھا۔ جب وہ اس کے ساتھ تھا اس نے اپنے دوستوں کو پیغامات نشر بھیجےکہ اس نے "ابھی سیکس کیا تھا"۔ اس نے ایک تصویربھی نشر کی جواس نے ٹیچر کے بستر پر لیٹی ہوئی تھی۔ یہ خبر پھیل گئی اور اس کی بازگشت بچوں اور لڑکوں کی کفالت کرنے والی چائلڈ لائن تنظیم تک پہنچی تو انہوں نے پولیس کو اطلاع دی جس نے اکتوبر 2021 نے ٹیچر کو ڈھونڈا اور گرفتار کر لیا۔

استغاثہ نے یہ مزید کہا کہ "اس کے بعد کیس ملتوی کر دیا گیا۔ اس حوالے سے مزید معلومات جمع کرنے کے لیے "العربیہ ڈاٹ نیٹ" برطانوی میڈیا کو کھنگالا تو پتا چلا کہ یہ اسکینڈل بہت سی نیوز ویب سائٹ اور اخبارات کی زینت بن چکا ہے "دی ٹائمز" اخبار کی رپورٹ کے مطابق خاتون ٹیچر اور طلبا کے درمیان مبینہ تعلقات کے بارے میں ان کیے رشتہ داروں کو بھی مکمل معلومات تھیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں