نیویارک میں احتجاج کرنے والے فلسطینی حامی کو گاڑی سے ٹکر ماری گئی، تین گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پولیس نے بتایا کہ منگل کو مین ہٹن کی سڑک پر ایک ڈرائیور نے فلسطینی حامی مظاہرین میں سے ایک کو گاڑی سے ٹکر مار دی جس کے بعد تین افراد کو گرفتار کر لیا گیا۔

نیویارک پولیس کی جاسوس میلیسا ڈیلا کروز نے بتایا کہ یہ واقعہ صبح 8:45 کے قریب اپر ایسٹ سائڈ پر 72 ویں سٹریٹ اور پارک ایونیو کے چوراہے کے قریب پیش آیا۔

تقریباً 25 مظاہرین ایک عمارت کے باہر مظاہرہ ختم کر کے واپس جا رہے تھے جب ان میں سے دو کی ایک ڈرائیور سے بحث شروع ہو گئی۔ اس کے بعد 57 سالہ ڈرائیور نے مظاہرہ کرنے والے ایک 55 سالہ شخص کو اپنی گاڑی سے ٹکر مار دی۔

مظاہرہ کرنے والےکا معمولی زخموں کی بنا پر ہسپتال میں علاج کیا گیا۔ ڈیلا کروز نے کہا کہ موٹر گاڑی کے ڈرائیور، زخمی شخص اور ایک اور مظاہرہ کرنے والے کو حراست میں لے لیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ پولیس ان کے نام جاری نہیں کر رہی ہے کیونکہ الزامات ابھی زیرِ التواء ہیں۔

مین ہٹن ڈسٹرکٹ اٹارنی کے دفتر نے کہا کہ وہ اس واقعے کے بارے میں اس وقت تک کوئی معلومات فراہم نہیں کر سکتے جب تک کہ مدعا علیہان کو پیش نہیں کیا جاتا۔

کولمبیا یونیورسٹی کا طلباء گروپ جو اسرائیلی کمپنیوں میں سرمایہ کاری ختم کرنے کا مطالبہ کرتا ہے، اس کے اراکین کے مطابق یہ ان تین میں سے ایک مظاہرہ تھا جو منگل کی صبح یونیورسٹی کے ٹرسٹیز کے گھروں کے سامنے کیے گئے۔ اس گروپ نے کیمپس میں ایک احتجاجی کیمپ کا اہتمام کیا جو حالیہ ہفتوں میں امریکہ کے طول و عرض میں دیگر تعلیمی اداروں میں ایسے ہی مظاہروں کی وجہ بن گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں