ٹرمپ کے 18 سالہ بیٹے نے سیاست میں قدم رکھ دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اپنی کم عمری کے باوجود سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے بیٹے بیرن ٹرمپ ریاست فلوریڈا میں ریپبلکن پارٹی کی جانب سے مندوب کے طور پر منتخب ہونے کے بعد سیاست کی دنیا میں داخل ہوگئےہیں۔

پولیٹیکو کے مطابق ٹرمپ مہم کے ایک اہلکار نے انکشاف کیا کہ بیرن جس کی عمر 18 سال ہے، ملک میں سیاسی عمل میں بہت دلچسپی رکھتے ہیں۔

ایوانکا سیاست سے بہت دور

اس کے علاوہ ریپبلکن نیشنل کنونشن کے نتائج کی ایک نقل سے پتہ چلتا ہے کہ ریاستی پارٹی نے ٹرمپ کے دیگر بچوں کو بھی منتخب کیا، جن میں ایرک ٹرمپ اپنے وفد کے سربراہ اور ڈونلڈ ٹرمپ جونیئر، ٹفنی پولس اور ان کے شوہر مائیکل پولس کو مندوبین کے طور پر منتخب کیا گیا۔

ایوانکا ٹرمپ
ایوانکا ٹرمپ

تاہم ایوانکا ٹرمپ ڈونلڈ ٹرمپ کے پانچ بچوں میں سے واحد اولاد ہیں جو ان کی انتظامیہ میں سینیر مشیر ہونے کے بعد سیاست سے دور رہی ہیں۔

اپنے خاندان کے بہت سے افراد کی طرح وہ اب فلوریڈا کو اپنا گھر کہتی ہیں۔

اگرچہ اس فہرست میں ٹرمپ خاندان کے کئی افراد شامل ہیں لیکن اس میں فلوریڈا کی ریپبلکن پارٹی کے ماحولیاتی نظام کے رہ نما بھی ہیں۔

ان میں وہ اہلکار شامل ہیں جنہوں نے گورنر رون ڈی سینٹس کی توثیق کی ہے جن میں فلوریڈا کے اٹارنی جنرل ایشلے موڈی، ریاست کے نامزد صدر ڈینی پیریز اور سینیٹ کے نامزد صدر بین البرٹن شامل ہیں۔

بیرن ٹرمپ (رائٹرز)
بیرن ٹرمپ (رائٹرز)

ٹرمپ بائیڈن کو'لیڈ' کررہے ہیں

ڈونلڈ ٹرمپ نے حال ہی میں اس بات پر افسوس کا اظہار کیا تھا کہ وہ مین ہٹن میں ایک بالغ فلمی اداکارہ کو رقم کی ادائیگی کے مقدمے کی وجہ سے بیرن ٹرمپ گریجویٹ اسکول نہیں دیکھ پائیں گے، لیکن جج نے انکار کیا اور انہیں اگلے ہفتے ویسٹ پام بیچ میں آکسبرگ اکیڈمی میں ایک تقریب میں شرکت کی اجازت دی۔

قابل ذکر ہے کہ رائے عامہ کے جائزوں سے معلوم ہوا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ فلوریڈا میں صدر جو بائیڈن سے 10 پوائنٹس سے زیادہ آگے ہیں۔ ڈونلڈ ٹرمپ نے 2016 اور 2020 میں یہ ریاست جیتی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں