’’وکٹری ڈے‘‘ کی تقریبات کے دوران روسی فوجی کا جوتا گم ہوگیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

روس میں ’’وکٹری ڈے‘‘ کی تقریبات کے دوران ایک عجیب و غریب اور مضحکہ خیز صورتحال پیدا ہوگئی جب ایک فوجی نے اپنا جوتا گم کردیا۔ سوشل میڈیا پر ویڈیو وائرل ہوگئی اور بڑی تعداد میں لوگوں نے اس پر تبصرے کئے۔

اس ویڈیو کلپ میں ایک روسی فوجی کو دکھایا گیا ہے جس نے دوسری جنگ عظیم میں نازی جرمنی اور اس کے اتحادیوں کے خلاف فتح کی 79 ویں سالگرہ پر "وکٹری ڈے" منانے والی فوجی پریڈ کے دوران اپنا جوتا گم کردیا۔

روسی صدر پوتن نے وکٹری ڈے کے حوالے سے اپنے خطاب میں کہا کہ ان کا ملک اپنے لیے کسی قسم کے خطرے کی اجازت نہیں دے گا۔ انہوں نے زور دیتے ہوئے کہا کہ روسی سٹریٹجک جوہری قوتیں مستقل الرٹ پر ہیں۔

وکٹری ڈے کے موقع پر فوجی پریڈ کے آغاز کے موقع پر اپنے خطاب میں پوتن نے مزید کہا کہ روس عالمی تصادم سے بچنے کے لیے پوری کوشش کرے گا لیکن ساتھ ہی ہم کسی کو بھی خود کو دھمکی دینے کی اجازت نہیں دیں گے۔ ہماری سٹریٹجک قوتیں مستقل جنگی تیاری کی حالت میں۔

انہوں نے کہا کہ بدلہ لینا، تاریخ کا مذاق اڑانا اور موجودہ نازی پیروکاروں کو جواز فراہم کرنے کی خواہش مغربی اشرافیہ کی عمومی پالیسی کا حصہ ہے۔ مغربی اشرافیہ کا مقصد زیادہ سے زیادہ علاقائی تنازعات، بین النسلی اور بین المذہبی دشمنی کو ہوا دینا ہے۔ تاکہ عالمی ترقی کے مراکز کی خودمختاری کو روکا جا سکے۔

پوتین کی موجودگی میں فوجی پریڈ

پوٹن کی موجودگی میں دارالحکومت ماسکو کے ریڈ سکوائر پر دوسری جنگ عظیم میں نازی جرمنی کے خلاف سوویت یونین کی فتح کی 79 ویں سالگرہ کے موقع پر فوجی پریڈ کا انعقاد کیا گیا۔ 8 مئی 1945 کو نازی جرمنی افواج نے ہتھیار ڈال دئیے تھے۔ پریڈ میں بیلاروس، قازقستان، کرغزستان، تاجکستان، ترکمانستان، ازبکستان، کیوبا، لاؤس اور گنی بساؤ کے رہنماؤں نے بھی شرکت کی۔ روس کے 11 ٹائم زونز میں بڑے روسی شہروں میں فوجی پریڈ کا انعقاد کیا گیا۔ ماسکو میں فوجی پریڈ 0700 جی ایم ٹی پر شروع ہوئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں