یوکرین میں فوج بھیجنے کا ہمارا کوئی منصوبہ نہیں: نیٹو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

نیٹو کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل میرسیا جوان نے اعلان کیا ہے کہ نیٹو اتحاد یوکرین کی حمایت جاری رکھنے کا خواہاں ہے لیکن اس کا یوکرین میں فوج بھیجنے کا کوئی منصوبہ نہیں ہے۔ میرسیا جوان نے ہفتہ کو کہا کہ فرانسیسی صدر نے یوکرین کی حمایت جاری رکھنے کی فوری ضرورت کے بارے میں بات کی ہے۔ نیٹو کی سطح پر اتفاق رائے سے فیصلے کیے جاتے ہیں۔ فی الحال ہمارا یوکرین میں نیٹو افواج کی تعیناتی کا کوئی منصوبہ یا سیاسی ارادہ نہیں ہے۔

رومانیہ کی خبر ایجنسی ’’ اجیر پریس‘‘ کے مطابق انہوں نے مزید کہا کہ ہم اب بھی یوکرین کی ہر ممکن مدد کرنے میں دلچسپی رکھتے ہیں لیکن ساتھ ہی ہم اس بات کے بھی خواہاں ہیں کہ یہ جنگ نیٹو اور روس کے درمیان کسی بڑے تنازع میں تبدیل نہ ہو جائے۔

نیٹو اتحاد کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل میرسیا جوان نے نشاندہی کی کہ یوکرین کے پائلٹوں کو تربیت دینے اور ایف سولہ لڑاکا طیاروں کو محفوظ بنانے کے حالیہ فیصلے جنگ کی موجودہ صورتحال سے جڑے ہوئے ہیں۔ یہ ریڈ لائنز عبور کرنے کا معاملہ نہیں ہے۔ یاد رہے اپریل کے اواخر میں یوکرین کے صدر زیلنسکی نے اپنے مغربی اتحادیوں سے کہا تھا کہ وہ کیوو کو اسلحے کی سپلائی میں تیزی لائیں تاکہ روس کے نئے حملے کو ناکام کیا جا سکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں