جزیرہ سینا کے قبائل کا نیا اتحاد، کیا یہ اسرائیل کے لیے مصر کا پیغام ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

مصر میں یونین آف عرب ٹرائب کے ادارے کے قیام نے اس کے قیام کی وجوہات کے بارے میں کئی سوالات کو جنم دیا ہے۔ ایک سوال یہ ہے کہ کیا یہ سیناء میں مخصوص سرگرمیوں کو عملی جامہ پہنانے کی خاطر تشکیل دیا گیا ہےجس میں فلسطینیوں کو غزہ سے بے گھر کرنے کے کسی اسرائیلی منصوبے کو روکنا ہے؟ یا اس کی دیگر وجوہات ہیں جن کا ابھی تک انکشاف نہیں کیا گیا۔


نقل مکانی کے منصوبے کو روکنا

سینا کے قبائلی اتحاد کے ترجمان مصطفیٰ بکری نے 'العربیہ ڈاٹ نیٹ' کو پچھلے بیانات میں اس بات کی تصدیق کی تھی یہ ادارہ نقل مکانی کے منصوبوں کا مقابلہ کرنے اور نقل مکانی کو روکنے میں اور غزہ میں فلسطینیوں کو فراہم کی جانے والی انسانی امداد کی ترسیل میں کردار ادا کرے گا۔

لیکن ایک مصری سکیورٹی ماہر نے مختلف رائے دی اورکہا کہ غزہ میں جو کچھ ہو رہا ہے اس سے کا تعلق سینا کے قبائل کے اتحاد سے ہوسکتا ہے مگر اس کی کچھ دیگر وجوہات بھی ہیں۔


فوجی اور قانونی تصادم کے دہانے پر

عرب وزرائے داخلہ کی کونسل میں عرب سکیورٹی میڈیا آفس کے سابق ڈائریکٹر میجر جنرل مروان مصطفیٰ نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ مصر اس وقت اپنی تاریخ کے ایک نازک اور فیصلہ کن مرحلے سے گذر رہا ہے۔ اس وقت مصر اسرائیل کے ساتھ فوجی اور قانونی تصادم کے دور میں داخل ہوچکا ہے۔اس لیے اسے تمام ذرائع کا سہارا لینے کا حق حاصل ہے جو کسی بھی لڑائی میں اس کے موقف کی تائید اور حمایت کا سبب بن سکیں۔


العرجانی کو منتخب کرنے کی وجوہات

انہوں نے کہا کہ عرب قبائل اتحاد کے سربراہ کے لیے ابراہیم العرجانی کا انتخاب کئی وجوہات کی بنا پرکیا گیا ہے جن میں ایک وجہ یہ ہے کہ وہ ترابین قبیلے کے سردارہیں جو سینا کے سب سے بڑے قبیلہ اور مصر کے سب سے بڑے تاجر ہیں۔ ان کی بہت سی بڑی کمپنیاں اور فیکٹریاں ملک میں موجود ہیں جو شمالی اور جنوبی سیناء میں عرب قبائل کے درمیان بہت زیادہ اثر و رسوخ رکھتے ہیں۔
کرتی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ العرجانی اس سے قبل دہشت گردی کا مقابلہ کرنے کے لیے سیناء قبائل کے نوجوانوں اور شیوخ کی صفوں کو متحد کرنے میں کامیاب رہے تھے۔ وہ سرنگوں کو بے نقاب کرنے، سینا کے نوجوانوں کو متحرک کرنے اور مصریوں کے ساتھ تعاون اور اتحاد کی ترغیب دینے میں کامیاب رہے۔ انہوں نے فوج کو مسلح گروہوں کا سراغ لگانے، ان کے ٹھکانوں کی اطلاع دینے اور انہیں ختم کرنے اور مصری ریاست سے الگ کرنے کے منصوبے مدد کی اور فلسطینیوں کی نقل مکانی کو روکنے میں معاون رہے ہیں۔

اسرائیلی چالوں کا مقابلہ

سیان کے عرب قبائل کے نئے اتحاد کی وجووہات میں ایک اور وجہ بھی بتائی جاتی ہے۔ ماہرین کا خیال ہے کہ اس کی وجہ مصر کی جزیرہ النقب کے بدوؤں کو اپنی طرف متوجہ کرنے کی حالیہ اسرائیلی چالوں کا مقابلہ کرنا اور عرب قبائل اور صحرائے نقب کے قبیلوں کے ساتھ اس کا اتحاد ہو سکتا ہے۔ کیونکہ دونوں جزائر باہم متصل ہیں اور ان کی سرحدیں براہ راست ملتی ہیں۔

خیال رہے کہ صحرائے النقب میں ایک قبائلی سردار نے گذشتہ رمضان میں ایک بڑی افطار ضیافت کا اہتمام کیا تھا جس میں اسرائیلی حکومت کے رکن اور سابق وزیر دفاع بینی گینٹز نے بھی شرکت کی تھی۔ اسرائیلی حکام کے ذرائع کا کہنا ہے کہ جزیرہ نما النقب کے عرب قبائل کو اپنے ساتھ ملانا حماس کا مقابلہ کرنے کی ایک نئی اسرائیلی چال ہوسکتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں