ممبئی میں دیو ہیکل اشتہاری بورڈ گرنے سے 14 افراد ہلاک، درجنوں زخمی

طوفان کے بعد ممبئی میں موسلا دھار بارشوں نے اثر گھاٹ کوپر کے علاقے سب سے زیادہ تباہی مچائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

بھارت کے صنعتی شہر ممبئی میں پیر کی شام کو پہلے گرد و غبار کے ساتھ تیز طوفان آیا اور پھر شدید بارش ہوئی، جس کی وجہ سے کئی علاقوں میں بجلی کے کھمبے، مچان اور درخت جڑ سے اکھڑ گئے۔ عوام کو پہلے سے اس طرح کے موسم کا کوئی اندازہ نہیں تھا، جس سے شہر میں افراتفری پھیل گئی۔

بل بورڈ گرنے کا واقعہ پنت نگر میں ایسٹرن ایکسپریس ہائی وے کے پاس واقع ایک پٹرول پمپ پر پیش آیا اور اس سے متعلق ویڈیوز میں دیکھا جا سکتا ہے کہ اس کی وجہ سے کئی کاریں اس بل بورڈ کے نیچے پھنس گئیں۔

نیشنل ڈیزاسٹر ریسپونس فورس (این ڈی آر ایف) کے ایک انسپکٹر گورو چوہان کے مطابق آٹھ لاشوں کو ملبے سے پہلے ہی نکالا گیا تھا، جبکہ باقی کا پتہ لگا لیا گیا ہے، تاہم ابھی تک انہیں نکالا نہیں گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ''ہم نے انہیں تلاش کر لیا ہے لیکن اس پٹرول پمپ کی وجہ سے ہم انہیں وہاں سے ہٹا نہیں سکتے، کیونکہ اس سے صورتحال مزید خطرناک ہو سکتی ہے۔''

ریاست مہاراشٹر کے نائب وزیر اعلی دیویندر فڑنویس نے اس حوالے سے سوشل میڈیا ایکس پر اپنے ایک بیان میں کہا کہ زخمیوں کا ہسپتال میں علاج چل رہا ہے، جبکہ اس کی تفتیش کا حکم دیا گیا ہے۔

دیر رات تک بل بورڈ کے نیچے پھنسے ہوئے زندہ بچ جانے والے افراد کی تلاش جاری رہی۔ مذکورہ بل بورڈ تقریباً 70 میٹر لمبا اور 50 میٹر چوڑا بتایا گیا ہے، اور حکام نے بل بورڈ لگانے والی کمپنی کے خلاف نوٹس جاری کیا ہے۔

خراب موسم اور گرد و غبار کے طوفان کی وجہ سے ممبئی ایئرپورٹ پر تقریباً ایک گھنٹے تک فلائٹ آپریشن کو عارضی طور پر معطل کرنا پڑا، جس کے نتیجے میں کم از کم 15 فلائٹس کو دوسرے شہروں کی جانب موڑنا پڑا۔

بہتوں سے درختوں کے اکھڑنے کے ساتھ ہی، کھمبوں کے گرنے سے شہر کے کچھ حصوں میں بجلی بھی کافی دیر تک غائب رہی، جس کی وجہ سے شہر کا ٹرین نیٹ ورک بھی درہم برہم ہو کر رہ گیا۔

بھارت کے محکمہ موسمیات کے مطابق ابھی بھی بعض علاقوں میں تیز ہوائیں چلنے کا امکان ہے اور لوگوں کو محتاط رہنے کا مشورہ دیا گیا ہے۔

بھارت میں جون اور ستمبر کے درمیان مون سون کے موسم کے دوران شدید بارشیں ہونے کے ساتھ ہی بھیانک سیلاب بھی آتے ہیں۔

یہ بارشیں فصلوں کے لیے بہت اہم ہوتی ہیں، لیکن بہت سے علاقوں میں اکثر بڑے پیمانے پر نقصان کی وجہ بھی بنتی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں