مصر: اپنے بچے کے اعضاء نکال کر فروخت کرنے کے الزام میں خاتون گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

مصر میں بچوں کے اعضاء کی چوری کا ایک نیا لرزہ خیز واقعہ سامنے آیا ہے جس نے ملک میں بھونچال پیدا کر دیا۔

اس تازہ اسکینڈل میں ایک خاتون پرالزام ہے کہ اس نے اپنےہی لخت جگر کے اعضا چوری کرنے کے لیے اسے نشہ آور دوائی پلا دی تھی۔ یہ واقعہ مصر کے پورٹ سعید کے علاقے میں پیش آیا۔ اس نے چند روز قبل شبرہ میں ایک بچے کے اعضا کی چوری کے مکروہ دھندکے لیے کم سن بچے کی بہیمانہ قتل کی یاد تازہ کردی ہے۔

پورٹ سعید گورنری میں سکیورٹی نے سروسز "ہ، ث ،د " نامی ایک خاتون کو اس وقت گرفتار کیا جب وہ اپنے چھوٹے بچے کو نشہ آور دوائی پلا کراس کا گردہ اور دیگر اندرونی اعضا چوری کرکے اعضا کی اسمگلنگ میں ملوث مافیا کو فروخت کرنا چاہتی تھی۔

"مقدمہ نمبر 3593 آف 2024 کی تحقیقات سے یہ بات سامنے آئی کہ خاتون طلاق یافتہ ہے اور اس کے دو بچے ہیں۔ "محمد" کی عمر8 سال جب کہ بچی کی دس سال ہے۔ اس نے سوشل میڈیا سائٹ کے ذریعے ایک شخص سے رابطہ کیا جو اعضاء خریدتا ہے۔اس سے کہا کہ وہ اپنے بچے کی تصویر کھینچے کراسے ارسال کرے جس میں وہ مکمل طور پر برہنہ ہو۔ خاتون نے ماں کے بجائے ایک جرائم پیشہ مجرم کا کردار ادا کرتے ہوئے یہ سب کچھ کیا۔

تحقیقات سے معلوم ہوا کہ اس شخص نے ماں کو بچے کو بے ہوش کرنے کے لیے دوا دینے پر راضی کیا۔ بچہ شدید بے ہوشی کی وجہ سے گرگیا جس کے بعد اسے ہسپتال منتقل کیا گیا۔ طبی معائنے کے بعد میڈیکل کو پتا چلا کہ بچے کو منشیات کی زیادہ مقداردی گئی ہے۔ ہسپتال نے کیس پولیس کے حوالے کردیا۔

پولیس نے شبے میں بچے کی ماں کو گرفتار کرکے اس سے پوچھ گچھر کی، اس نےتفتیش کے دوران اعتراف کیا کہ وہ انٹرنیٹ پر ایسے لوگوں سے رابطے تھی جنہوں نے اسے اپنے بچے کی برہنہ تصویر کھینچنے اور اسے نشہ آور ادویات دینے کو کہا تاکہ اسے لے جایا جا سکے اور اس کے اندرونی اعضا نکالے جا سکیں۔ ماں نے یہ بھی اعتراف کیا کہ وہ اپنے بچے کے اعضاء اس شخص کو فروخت کرنے کا ارادہ رکھتی تھی جس نے اس سے آن لائن رابطہ کیا۔

مصر میں حال ہی میں قلوبیہ گورنری میں شبرہ کے علاقے میں ایک دل دہلا دینے والا واقعہ سامنے آیا تھا جہاں ایک کمسن بچہ نصف کٹا ہوا جسم ملا۔ اسے قتل کرکے اس کے اعضا چوری کرلیےگئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں