بھارتی انتخابات کے پانچویں مرحلے میں 49 سیٹوں کے لیے پولنگ

راہول گاندھی، سمرتی ایرانی، راج ناتھ سنگھ اور بھارت کے زیر انتظام کشمیر کے شمالی حلقے بارہمولہ کی سیٹ سے عمر عبداللہ میدان میں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

بھارت میں پیر کے روز عام انتخابات کے پانچویں مرحلے کے تحت چھ ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام دو علاقوں میں پارلیمان کی 49 نشستوں کے لیے ووٹ ڈالے جا رہے ہیں۔ سب سے دلچسپ مقابلہ اتر پردیش کے امیٹھی اور رائے بریلی کی سیٹوں پر ہے، جہاں کانگریس اور بی جے پی کے درمیان زبردست مقابلے کی توقع ہے۔

ریاست اتر پردیش کے فیض آباد حلقے میں بھی پولنگ ہو گی جہاں ایودھیا شہر واقع ہے اور جو حکمراں جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی سیاست کا مرکز رہا ہے۔

حکمراں جماعت ’بھارتیہ جنتا پارٹی‘ (بی جے پی) نے 2019 میں ان میں سے 32 نشستوں پر کامیابی حاصل کی تھی۔ اس بار وہ ان میں سے 40 پر اور کانگریس 18 پر الیکشن لڑ رہی ہے اورباقی نشستیں حلیف پارٹیوں کے لیے چھوڑ دی ہیں۔

پانچویں مرحلے میں کئی مرکزی وزرا اور سیاسی جماعتوں کے سربراہ اپنی قسمت آزما رہے ہیں۔ یو پی میں رائے بریلی کی سیٹ سے راہول گاندھی میدان میں ہیں، جبکہ اسی سے متصل سیٹ امیٹھی سے مرکزی وزیر اسمرتی ایرانی انتخاب لڑ رہی ہیں۔ وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ لکھنؤ کی سیٹ سے جبکہ بھارت کے زیر انتظام کشمیر کے شمالی حلقے بارہمولہ کی سیٹ سے عمر عبداللہ کو بھی سخت مقابلے کا سامنا ہے۔

الیکشن کمیشن نے ووٹروں سے زیادہ سے زیادہ تعداد میں ووٹ ڈالنے کی اپیل کی ہے، جبکہ پولنگ کے لیے سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔

ریاست بہار اور جھار کھنڈ کی تین تین نشستوں پر آج بروز پیر ووٹ ڈالے جا رہے ہیں، جبکہ ریاست مہاراشٹر کی 13 سیٹوں پر، اڑیسہ کی پانچ، اتر پردیش کی 14، مغربی بنگال کی سات سیٹوں پر پولنگ ہو رہی ہے۔ بھارت کے زیر انتظام جموں و کشمیر میں ایک اور لداخ کی بھی ایک سیٹ پر انتخاب ہو رہا ہے۔

اس مرحلے میں ریاست اڑیسہ کی اسمبلی کی بھی 35 سیٹوں پر ووٹنگ ہو رہی ہے۔

ریاست اتر پردیش میں آج جن چودہ نشستوں پر پولنگ ہو رہی ہے، اس میں 13 پر بی جے پی نے گذشتہ انتخابات میں کامیابی حاصل کی تھی۔ صرف رائے بریلی کی سیٹ سے کانگریس کی سابق صدر سونیا گاندھی کامیاب ہو پائی تھیں۔ اس بار رائے بریلی سے سونیا گاندھی کے بجائے ان کے بیٹے راہول گاندھی میدان میں ہیں۔

حالیہ انتخابی مرحلے کی انچاس نشستوں کے لیے 82 خواتین سمیت کل 695 امیدوار میدان میں ہیں۔ پچھلے چار مرحلوں میں کم ٹرن آؤٹ سے پریشان، الیکشن کمیشن آف انڈیا (ای سی آئی) نے ووٹروں سے زیادہ تعداد میں ووٹ ڈالنے کی اپیل کی ہے۔

اس مرحلے میں 8.95 کروڑ سے زیادہ لوگ ووٹ ڈالنے کے مجاز ہیں، جس میں 4.26 کروڑ خواتین اور 5,409 ٹرانس جینڈرز ووٹرز شامل ہیں۔ اس عمل کو آسان بنانے کے لیے ملک بھر میں 94,732 پولنگ اسٹیشنوں پر 9.47 لاکھ پولنگ اہلکاروں کو تعینات کیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں