معاہدات قومی سلامتی اور فلسطینیوں کے تاریخی تحفظ کی کوشش سے نہیں روکتے : مصر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر نے اپنی سرحدوں تک پہنچی اسرائیلی فوج اور اس کے جاری حملوں کے حوالے سے خبردار کیا ہے کہ ' کوئی بھی معاہدہ مصر کو اپنی قومی سلامتی اور فلسطینیوں کے تاریخی کے تحفظ کے لیے کوشش کرنے سے نہیں روکتا ہے۔ مصر کی طرف سے اس امر کا اظہار کسی مصری ذمہ دار نے براہ راست نہیں کیا۔ بلکہ مصری ذرائع نے ' العربیہ' سے بات چیت کے دوران کیا ہے۔

تاہم ان مصری ذرائع کا یہ موجودہ منظرنامے کے حوالے سے کافی اہم ہے۔ کہ جب اسرائیلی فوج غزہ کی پٹی کے انتہائی جنوب میں رفح شہر پر بھی زمینی حملہ شروع کر دیا ہے اور رفح راہداری کو بھی بند کر کھا ہے۔ یوں مصری سرحد پر اسرائیلی فوج نے غیر معمولی صورت حال پیدا کر رکھی ہے۔

مصر اور اسرائیل کے درمیان آنے والا ہر روز کشیدگی بڑھانے کا باعث بن رہا ہے۔ کہ اسرائیل اڑوس پڑوس کی پروا کیے بغیر اپنی کارروائیاں جس طرٖح چاہتا ہے بڑھا رہا ہے۔ جدید اسلحے اور عالمی طاقتوں کی سرپرستی کے باعث وہ خطے میں اپنے آپ کو ایک زیادہ طاقتور اور خود سر ملک کے طور پر پیش کرتا ہے۔

مصر اور اسرائیل کے درمیان اگرچہ صدر انوارالسادات کے زمانے سے دو طرفہ تعلقات اور معاہدہ موجود ہے۔ مگر مصر نے اب کئی مہینوں بعد نسبتاً زیادہ کھلے لفظوں سے کہنا شروع کر دیا ہے کہ ' غزہ میں اسرائیلی مہم سے اس کے ساتھ تعلقات کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔

مصر کو رفح میں اسرائیل کی جارحانہ کارروائی کے بعد رفح راہداری سے غزہ میں امدادی سامان کی ترسیل روکے جانے پر بھی تشویش ہے۔ خیال رہے اسرائیلی فوج نے سات مئی سے رفح راہداری کا کنٹرول اپنے ہاتھ میں لے رکھا ہے اور ہر طرح کی نقل و حمل روک رکھی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں