نو سالہ بچی پر ہوائی جہاز کے ٹوائلٹ میں کیمرے نصب کرنے کا الزام واپس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
6 منٹس read

امریکن ایئر لائنز کے وکیل کی جانب سےدو روز قبل دعویٰ کیا گیا تھا کہ ایک 9 سالہ بچی نے طیارے کے ٹوائلٹ میں رکھے فون پراس کی فوٹیج ریکارڈ کرنے کے بعد لاپرواہی کا مظاہرہ کیا تھا مگر فضائی کمپنی نےیہ دعویٰ وکیل کی غلطی کہہ کر واپس لے لیا ہے۔

اس کیس کی تفصیلات سامنے آنے کے بعد گذشتہ دو دنوں کے دوران امریکی عوامی حلقوں میں ایک نئی بحث چھڑ گئی تھی۔ دراصل یہ واقعہ جنوری 2023ء کا ہے۔ فلائٹ اٹینڈنٹ میں سے ایک نے طیارے کے ٹوائلٹ میں خفیہ کیمرہ لگا کر صرف 9 سال کی لڑکی اور کچھ دوسرے مسافروں کی تصاویر بنائیں۔

اس کے باوجود ایئرلائن نے بچی پر الزام لگایا کہ اس کی غلطی تھی اور یہ کہ اس کے ٹوائلٹ سے بچی کا فون ملا تھا، جو کچھ ہوا وہ اس کی طرف سے لاپرواہی کا مظاہرہ تھا۔

abcnews" ‘‘ ویب سائٹ کی طرف سے شائع ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق تاہم ایئر لائن نے ایک دن بعد اپنا دعویٰ واپس لے لیا۔ دعوے کی فائل واپس لے لی اور کہا کہ جو کچھ ہوا وہ اس کے قانونی مشیر کی غلطی تھی۔

کمپنی کا دعوے سے رجوع

یہ پیش رفت وقت سامنے آئے جب ’ایف بی آئی‘ کے ایجنٹوں نے واقعے کے تقریباً ایک سال بعد بچی کے خاندان کے گھر کا دروازہ کھٹکھٹا کر اس کے والدین کو بتایا کہ اس کی ویڈیوز ایک سابق فلائٹ اٹینڈنٹ کے فون پر ملی ہیں جو اس وقت حراست میں ہے۔

دریں اثنا ایئر لائن نے کل بدھ کو ایک بیان میں وضاحت کی تھی کہ اس کے قانونی مشیر جو اس کی انشورنس کمپنی میں تعینات تھے نے دعویٰ جمع کرانے میں غلطی کی تھی۔

اس نے مزید کہا کہ درج کردہ دفاع ایئر لائن کی نمائندگی نہیں کرتا ہے اور اس نے اس میں ترمیم کرنے کی ہدایت کی۔ وہ اس بات پر یقین رکھتے ہیں کہ بچی نے کوئی غلطی نہیں کی۔

میزبان زیرحراست

امریکی ایئر لائنز کی جانب سے منگل کو عدالت میں فائلنگ دائر کی گئی تھی جس میں لڑکی کے والدین کی جانب سے ٹیکساس ڈسٹرکٹ کورٹ میں ایئر لائن اور فلائٹ اٹینڈنٹ ایسٹس کارٹر تھامسن کے خلاف دائر سول مقدمہ کے جواب میں درخواست دائر کی گئی تھی، جس نے مبینہ طور پر بچے کی فوٹیج ریکارڈ کی تھی۔

مقدمہ میری ڈو کے والدین کی طرف سے دائر کیا گیا تھا جس میں الزام لگایا گیا تھا کہ تھامسن نے لاس اینجلس کی پرواز کے دوران جہاز کے بیت الخلا میں خفیہ طور پر ان کی 9 سالہ بیٹی کی ویڈیو بنائی تھی۔

میزبان ایٹس کارٹر تھامسن
میزبان ایٹس کارٹر تھامسن

تھامسن کو فی الحال وفاقی پولیس کی حراست میں رکھا گیا ہے جب کہ اس پر بچوں کے جنسی استحصال کی کوشش اور بچوں کی تصاویر رکھنے کا الزام لگایا گیا ہے جس میں ایک نابالغ کو دکھایا گیا ہے۔

اسے اس وقت گرفتار کیا گیا جب ایک دوسری پرواز میں 14 سالہ مسافر نے طیارے کے ٹوائلٹ میں تھامسن کا فون چھپا ہوا دریافت کیا۔

چار کم عمر خواتین مسافروں کی ریکارڈنگ

پولیس نے کہا کہ تھامسن کے پاس چار اضافی کم عمر مسافروں کی ریکارڈنگ تھی جو ایک ہی جہاز میں باتھ روم کے استعمال کے دوران ریکارڈ کی گئی تھیں۔

ان میں سے ایک ریکارڈنگ مبینہ طور پر میری ڈو کی تھی۔ تھامسن نے الزامات کی صحت سے انکار کیا ہے۔

منگل کو ایئر لائن کی فائلنگ کے جواب میں میری ڈو کی والدہ جین ڈو نے کہا کہ "اس خوفناک واقعے کی ذمہ داری قبول کرنے کے بجائے امریکن ایئر لائنز اس کی فلم بندی کے لیے ہماری بیٹی پر الزام لگا رہی ہے‘‘۔

والدہ نے مزید کہا کہ "اگران کا ضمیردرست کام کرتا تو وہ ایسا دعویٰ کیسے کر سکتے ہیں کہ یہ ایک ہی وقت میں ہمیں حیران اورغم وغصے دوچار کرنے والا ہے‘‘۔

امریکن ایئرلائنز کی جانب سے عدالت میں اپنے دعوے سے دستبرداری کے جواب میں لڑکی کے خاندان کی نمائندگی کرنے والے وکیل پال لیولین نے کہا "یہ واضح ہے کہ امریکن ایئر لائنز کو 9 سالہ لڑکی پر الزام لگانے پر میڈیا اور عوام کی جانب سے ردعمل کا سامنا کرنا پڑا"۔

سفر کے دوران کیا ہوا؟

قابل ذکر ہے کہ نو سالہ لڑکی کی کہانی اس وقت سامنے آئی جب وہ پرواز کے دوران قریبی ٹوائلٹ استعمال کرنے کے لیے اٹھی، لیکن وہ ٹوائلٹ بند پایا، تو تھامسن نے اسے بتایا کہ فرسٹ کلاس باتھ روم کھلا ہے اور وہ وہاں اس کے ساتھ چلی گئی۔

حکام کے مطابق اس نے اسے بتایا کہ وہ ہاتھ دھونا چاہتا ہے ساتھ ہی کہا کہ ٹوائلٹ سیٹ ٹوٹی ہوئی ہے۔اس کے بعد وہ اندر گیا اور تھوڑی دیر بعد باتھ سے باہر آگیا۔

تاہم عدالتی دستاویزات کے مطابق بچی نے کھلے ٹوائلٹ سیٹ کے ڈھکن کے نیچے سرخ اسٹیکر دیکھا جس پر ’’کیٹرنگ کا ناکارہ سامان‘‘ اور " ایکسپائر‘‘ لکھا تھا۔

اس کے بعد اس نے اسٹیکرز اور سیل فون کی تصویر کھینچی۔ بچی باہر آئی تو تھامسن دوبارہ فوراً اندر واپس چلا گیا۔

اس کی تصویر میں ایک آئی فون دکھایا گیا تھا جو سیٹ پر عجیب و غریب انداز میں نصب تھا۔اس کے کیمرے کے علاوہ باقی سارے موبائل کو ڈھانپ دیا گیا تھا۔ اس کے والدین نے عملے کے دیگر ارکان کو آگاہ کیا، جنہوں نے کپتان کو واقعے کی اطلاع دی۔

بچوں کی برہنہ تصاویر

لڑکی کے والد نے مبینہ طور پر تھامسن کا سامنا کیا جس نے پھر بوسٹن میں طیارے کے اترنے سے پہلے اپنے فون سے خود کو باتھ روم میں بند کر لیا، جہاں پولیس کو 11 اضافی اسٹیکرز ملے اور پتہ چلا کہ اس کا فون فیکٹری سیٹنگز میں بحال ہو سکتا ہے۔

لیکن حکام نے اس کے آئی کلاؤڈ اکاؤنٹ کو تلاش کیا اور جنوری اور اگست 2023 کے درمیان چار دیگر واقعات پائے جن میں تھامسن نے مبینہ طور پر 7، 9، 11 اور 14 سال کی کم عمر لڑکیوں کو رجسٹر کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں